نوشہرہ کینٹ اسٹیشن مین بائی پاس روڈ ٹوٹ پھوٹ کا شکار

نوشہرہ کینٹ اسٹیشن مین بائی پاس روڈ ٹوٹ پھوٹ کا شکار

  

نوشہرہ(بیورورپورٹ)نوشہرہ کینٹ اسٹیشن مین بائی پاس روڈ ٹوٹ پھوٹ کا شکار،تعمیراتی سڑک میں کروڑوں روپے کے کرپشن کا انکشاف،ایک سال پہلے تعمیر کردہ روڈ کھنڈرات میں تبدیل آئے روز جان لیوا حادثات روز کا معمول بن گئے،تاہم متعلقہ ادارے اور انتظامیہ خاموش،محکمہ این ایچ اے کی غفلت اور لاپرواہی کی وجہ سے ٹھیکیدار نے تعمیراتی سڑک میں ناقص میٹریل کا استعمال کرکے خزانے کروڑوں  روپے کا نقصان پہنچایا،مقامی شہریوں نے وفاقی حکومت،محکمہ نیب،اینٹی کرپشن سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ این ایچ اے افسران اور ٹھیکیدار کے خلاف تحقیقات اور سخت کاروائی عمل میں لائے،تفصیلات کے مطابق نوشہر ہ کینٹ لالکرتی مین بائی پاس پشاوراور راولپنڈی کو ملانے والی سڑک عرصہ دراز سے کھنڈرات میں تبدیل ہوگئی ہے اور اسی وجہ سے مین بائی پاس روڈ آئے روز جان لیوا حادثات رونما ہورہے ہیں۔محکمہ این ایچ اے اور ٹھیکیدار کی ملی بھگت کے باعث اس سڑک کی تعمیر میں ناقص میٹریل کا استعمال کرکے قومی خزانے کو کروڑوں روپے کا ٹیکہ لگاچکے ہیں جبکہ ابھی تک محکمہ نیب،اینٹی کرپشن جیسے بڑے اداروں نے کوئی ایکشن یا کاروائی نہیں کی اورکرپشن کے اس اسکینڈل کو بے نقاب نہیں کیا،جبکہ دوسری جانب بارش کے دنوں میں جگہ جگہ پر یہ مین بائی پاس روڈ تالاب کا منظر بھی پیش کرتا ہے جس کی وجہ سے علاقہ مکینوں کو شدید دشواری کا سامنا کرنا پڑتا ہے جبکہ مقامی افراد کو ایمرجنسی کی صورت میں اسپتال لے جاتے وقت بھی شدید پریشانی کا سامنا کرناپڑتا ہے۔مقامی افراد نے اعلی حکام،چیف جسٹس آف پاکستان، محکمہ نیب اور اینٹی کرپشن سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ محکمہ این ایچ اے کے افسران اور ٹھیکیدار کے خلاف تحقیقات کرکے ملوث افراد کو قانون کے مطابق سخت سے سخت سزا دی جائے اور روڈ کی تعمیر جلد از جلد مکمل کرکے علاقہ مکینوں کو سہولیات فراہم کی جائے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -