عدالت نے دعا زہرہ کو 30 مئی کو عدالت میں پیش کرنے کا حکم جاری کر دیا 

عدالت نے دعا زہرہ کو 30 مئی کو عدالت میں پیش کرنے کا حکم جاری کر دیا 
عدالت نے دعا زہرہ کو 30 مئی کو عدالت میں پیش کرنے کا حکم جاری کر دیا 

  

کراچی(ڈیلی پاکستان آن لائن ) سندھ ہائیکورٹ نے دعا زہرہ کو 30 مئی کوعدالت میں پیش کرنے کا حکم دے دیا ہے ۔

تفصیلات کے مطابق سندھ ہائیکورٹ میں دعا زہرہ کی بازیابی سے متعلق درخواست کی سماعت ہوئی جس سلسلے میں آئی جی سندھ، ایس ایس پی ایسٹ، دعا زہرہ کے والدین اور دیگر عدالت میں پیش ہوئے جب کہ پولیس نے لڑکی کی بازیابی سے متعلق اپنی رپورٹ پیش کی۔پولیس رپورٹ میں بتایا گیا کہ مظفر آباد کی لوکیشن ٹریس ہوئی مگر کل تمام نمبرز بند ہوگئے، سگنلز بالاکوٹ میں لوکیٹ ہوئے۔آئی جی سندھ نے عدالت کو بتایا کہ پنجاب پولیس سے رابطہ کرنے پر معلوم ہوا بچی کو کے پی کے منتقل کردیا گیا ہے۔اس پر عدالت نے کہا کہ لڑکی کو یہاں لانا پڑے گا ، یہیں کیس کا فیصلہ ہوگا۔

عدالت نے دعا زہرہ کو 30 مئی کو پیش کرنے کا حکم دیا اور اس سلسلے میں پولیس، قانون نافذ کرنے والے اداروں کو تمام ممکنہ اقدامات کرنے کا حکم دیا۔عدالت نے سیکرٹری داخلہ کو تمام صوبوں کی پولیس کو ہدایات جاری کرنے کا حکم دیتے ہوئے کہا کہ تمام صوبوں کی پولیس کو دعا زہرہ کی بازیابی کیلئے اقدامات کرے۔

عدالتی کارروائی کے بعد میڈیا سے گفتگو میں آئی جی سندھ کامران فضل نے کہا کہ کیس کی تحقیقات جاری ہیں، ابھی مزید نہیں بتا سکتا تاہم ایسا کوئی سراغ نہیں ملا کہ اس میں منظم گروہ ملوث ہو۔انہوں نے کہا کہ جو لڑکی کے ساتھ ہیں ان کو معلوم ہوجاتا ہے کہ ہم پہنچ گئے تو وہ نکل جاتے ہیں، کوشش کررہے ہیں بچی جلد بازیاب ہو جائے۔

مزید :

قومی -