اکثریت حاملہ خواتین میں بچے کے دماغ کی نشوونما کے لیے ناگزیر غذائی جزو کی کمی کا انکشاف ، روزانہ 3انڈے کھانے کامشورہ

اکثریت حاملہ خواتین میں بچے کے دماغ کی نشوونما کے لیے ناگزیر غذائی جزو کی کمی ...
اکثریت حاملہ خواتین میں بچے کے دماغ کی نشوونما کے لیے ناگزیر غذائی جزو کی کمی کا انکشاف ، روزانہ 3انڈے کھانے کامشورہ

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) ماہرین نے نئی تحقیق میں 90فیصدحاملہ خواتین میں ایک ایسے غذائی جزو کی کمی کا انکشاف کر دیا ہے جو ماں کے پیٹ میں بچے کے دماغ کی نشوونما کے لیے ناگزیر ہوتا ہے۔ میل آن لائن کے مطابق اس غذائی جزو کا نام ’کولین‘ (Choline)ہے، جس کے متعلق یونیورسٹی آف نارتھ کیرولائنا کے ماہرین کا کہنا ہے کہ فی زمانہ 90فیصد حاملہ خواتین میں اس کی کمی ہوتی ہے جس کے سبب 90فیصد بچوں کے دماغ کی نشوونما میں کسی حد تک کمی رہ جاتی ہے۔

تحقیقاتی ٹیم کے سربراہ ڈاکٹر سٹیون زیسیل کا کہنا تھا کہ ”کولین صرف ماں کے پیٹ میں ہی نہیں بلکہ پیدائش کے بعد پہلے تین سال میں بچے کی دماغی نشوونما کے لیے ازحد ضروری ہوتا ہے۔ یہ الکوحل سنڈروم جیسے انتہائی مہلک عارضوں سے بھی بچوں کو بچاتا ہے۔ جن ماﺅں میں کولین کی کمی ہو، انہیں چاہیے کہ روزانہ تین انڈے کھائیں۔ روزانہ تین انڈے کسی بھی حاملہ خاتون کے لیے درکار کولین کی مقدار پوری کر سکتے ہیں۔“

مزید :

تعلیم و صحت -