مردہ بچی کی پیدائش، والد قبرستان میں دفن کر آیا، مقامی لوگوں کے  اعتراض  پر  ایک گھنٹے بعد قبر کشائی  کی تو ایسا منظر کہ آنکھیں کھلی کی کھلی رہ گئیں

مردہ بچی کی پیدائش، والد قبرستان میں دفن کر آیا، مقامی لوگوں کے  اعتراض  پر ...
مردہ بچی کی پیدائش، والد قبرستان میں دفن کر آیا، مقامی لوگوں کے  اعتراض  پر  ایک گھنٹے بعد قبر کشائی  کی تو ایسا منظر کہ آنکھیں کھلی کی کھلی رہ گئیں

  

سرینگر (ڈیلی پاکستان آن لائن) مقبوضہ کشمیر میں ہسپتال انتظامیہ کی جانب سے مردہ قرار دی جانے والی بچی کے تدفین کے بعد زندہ ہونے کے انکشاف پر ہنگامہ برپا ہوگیا۔

بھارتی میڈیا کے مطابق بانہال کے ضلعی ہسپتال میں بشارت صادق کی اہلیہ نے بیٹی کو جنم دیا۔ سٹاف نے بشارت کو بتایا کہ بچی مردہ پیدا ہوئی ہے جس کے بعد وہ اپنے برادرِ نسبتی لطیف کے ساتھ مل کر بچی کو قریبی قبرستان میں دفن کر آیا۔ مقامی لوگوں نے بچی کی تدفین پر اعتراض کیا اور مطالبہ کیا کہ اسے اپنے مقامی قبرستان میں دفن کیا جائے۔

مقامی لوگوں کے مطالبے پر  بشارت اور لطیف نے ایک گھنٹے بعد قبر کشائی کی تو انکشاف ہوا کہ بچی کی سانسیں چل رہی ہیں۔ وہ بچی کو فوری طور پر سرینگر کے ہسپتال لے کر بھاگے جہاں اس کا علاج جاری ہے۔ ڈاکٹرز کا کہنا ہے کہ بچی کا وزن آدھا کلو ہے اور اس کی سانسیں چل رہی ہیں۔

مقامی لوگوں کو اس واقعے کا پتا چلا تو ضلعی ہسپتال کی انتظامیہ کے خلاف شدید احتجاج کیا اور واقعے کی شفاف انکوائری کا مطالبہ کیا۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -