بشارالا سد کے مستقبل پر مذاکرات کیلئے روسی صدر کی ایران

بشارالا سد کے مستقبل پر مذاکرات کیلئے روسی صدر کی ایران

تہران (اے پی پی) روس کے صدر ولادی میر پیوٹن قدرتی گیس پیدا کرنے والے ممالک کی سربراہ کانفرنس میں شرکت کے لیے ایران روانہ ہو گئے ہیں۔ اپنے اس دورے کے دوران صدرپیوٹن اپنے ایرانی ہم منصب حسن روحانی اور سپریم لیڈر آیت اللہ علی خامنہ ای سے بھی ملاقات کریں گے۔خیال رہے کہ روسی صدر کا ایران پر اقتصادی پابندیوں کے خاتمے اور تہران کے جوہری پروگرام پر سمجھوتے کے بعد تہران کا پہلا دورہ ہے۔ اگرچہ بظاہر اس دورے کا مقصد 2011ء میں قائم کیے گئے قدرتی گیس پیدا کرنے والے ملکوں کے گیارہ رکنی فورم میں شرکت کرنا ہے مگر روسی صدر کا دورہ محض اس کانفرنس میں شرکت تک محدود نہیں ہو گا۔ کانفرنس میں شام کے صدر بشارالاسد کے سیاسی مستقبل کے حوالے سے بھی بات چیت کی جائے گی۔روسی ذرائع کا کہنا ہے کہ صدر پیوٹن اپنے دورہ تہران کے دوران ایرانی قیادت سے دہشت گردی کے خلاف جاری جنگ اور شام کے بحران پر تفصیلی بات چیت کریں گے۔ صدر روحانی اور ولادی میر پیوٹن کے درمیان ملاقات کے ایجنڈے میں شام کا معاملہ سر فہرست رہے گا۔ذرائع کے مطابق روسی صدر اور ایرانی حکام کے درمیان بات چیت میں شامی اپوزیشن کے نمائندوں کے ساتھ مذاکرات، شام میں عبوری حکومت کے قیام کے لیے اپوزیشن اور حکومت کے درمیان بات چیت کی بحالی پر بھی تبادلہ خیال کیا جائے گا۔مبصرین کے خیال میں روس اور ایران دونوں شام میں عبوری حکومت کے قیام کے لیے کسی متفقہ فارمولے تک پہنچنے کی کوشش کریں گے۔ گیس پیدا کرنے والے دیگر ممالک کی قیادت بھی شام کے بحران کے حل کے لیے بات چیت پر زور دے گی۔

مزید : عالمی منظر