ٹیسٹ کرکٹ کی تاریخ کا پہلا ڈے نائٹ میچ27 نومبر سے کھیلا جائیگا

ٹیسٹ کرکٹ کی تاریخ کا پہلا ڈے نائٹ میچ27 نومبر سے کھیلا جائیگا

اسلام آباد (آن لائن)کرکٹ کی تاریخ میں پہلی مرتبہ آسٹریلیا کے شہر ایلڈیلیڈ میں نیوزی لینڈ اور آسٹریلیا کے درمیان 27 نومبر کو ہونے والا ٹیسٹ میچ ڈے نائٹ ہو گا ۔ ٹیسٹ میچ میں پہلی مرتبہ سرخ بال کی جگہ گلابی رنگ کا بال استعمال کیا جائے گا ۔تفصیلات کے مطابق آسٹریلیا کے شہر ایلڈیلیڈ میں نیوزی لینڈ اور آسٹریلیا کے درمیان 27 نومبر سے یکم دسمبر تک منعقد ہونے والا تیسرا ٹیسٹ میچ ڈے نائٹ کھیلا جائے گا جو کہ کرکٹ کی تاریخ میں ایک منفرد اضافہ ہو گا ۔ آسٹریلیا کے شہر ایلڈیلیڈ کے گراؤنڈ میں 1884ء سے اب تک 146 ٹیسٹ میچ کھیلے گئے جبکہ نیوزی لینڈ اور آسٹریلیا کے درمیان ہونے والا ڈے نائٹ ٹیسٹ میچ پہلی مرتبہ کھیلا جائے گا ۔نیوزی لینڈ اور آسٹریلیا کے درمیان منعقد ہونے والے انٹرنیشل ڈے نائٹ ٹیسٹ میچ میں پہلی مرتبہ سرخ رنگ کے بال کی بجائے گلابی رنگ کا بال بھی استعمال ہو گا ۔انٹرنیشنل کرکٹ کونسل ( آئی سی سی ) کے صدر ظہیر عباس کا کہنا ہے کہ پنک گیند سے کرکٹ میں نیا انقلاب برپا ہونے والا ہے۔نائٹ ٹیسٹ کے حوالے سے کرکٹرز کے اندیشے بلاجواز نہیں ہیں، ایڈیلیڈ میں تجربے کی کامیابی کے باوجود تمام 5 روزہ مقابلوں کا انعقاد مصنوعی روشنیوں میں نہیں ہوگا، کچھ ممالک اور کنڈیشنز میں رات کو طویل طرز کی کرکٹ مناسب نہیں ہے،۔ ظہیر عباس نے کہا کہ میں تاریخ کے پہلے ڈے اینڈ نائٹ ٹیسٹ کی جانب قدم بڑھانے پرآسٹریلیا اور نیوزی لینڈ کرکٹ بورڈز کو مبارکباد پیش کرتا ہوں، پنک گیند کے ساتھ کافی تجربے ہوچکے ۔

ور اب اس سے نئے دور کاآغاز ہونے والا ہے۔ انھوں نے کہا کہ گلابی بال کے حوالے سے کرکٹرز کے خدشات بھی بلاجواز نہیں، ہم بھی1977 میں سفید گیند کے ساتھ ون ڈے کرکٹ کھیلنے کے خیال پر ایسے ہی شش و پنج کا شکار تھے لیکن اب اس کے بغیر ایک روزہ کرکٹ کا تصور ہی محال ہے۔

مزید : کھیل اور کھلاڑی