جوہر ٹاؤن میں 100کنال سرکاری اراضی پر قبضہ ، حقیقی مالکان خوار

جوہر ٹاؤن میں 100کنال سرکاری اراضی پر قبضہ ، حقیقی مالکان خوار

لاہور(اقبال بھٹی)لاہور ڈویلپمنٹ اتھارٹی کی ایم اے جوہر ٹاؤن سکیم کے سی بلاک میں 100کنال اراضی پر لینڈ مافیا کا قبضہ،ایل ڈی اے کے پلاٹوں کو دوسرے مالکان میں فروخت کر دیا ۔قبضہ گروپ اتنا طاقتور ہے کہ اتھارٹی بھی ان کے سامنے بے بس نظر آتی ہے جبکہ پلاٹوں کے حقیقی مالکان بھی خوار ہونے لگے۔تفصیلات کے مطابق محمد علی جوہر ٹاؤن سکیم کے سی بلاک میں 5،5مرلے کے 200پلاٹوں پر لینڈ مافیا نے قبضہ کر کے دوسرے لوگوں میں بیچ دیا ہے جب کہ سڑکیں ،واٹر،سیوریج اور بجلی کی سروسز اتھارٹی کی طرف سے مہیا کی گئی تھیں اس جگہ پر 5،5مرلے کے پلاٹوں کی زوننگ ہے جس میں 200کے لگ بھگ پلاٹوں پر قبضہ کیا گیا ہے ،پلاٹوں کی جگہ 50کنال بنتی ہے جب کہ 50کنال سٹرکوں اور پارکوں میں آتی ہے ۔لینڈ مافیا نے 200کنال پر قبضہ کر ا کر پر فیصل گارڈن کے نام سے سکیم بنا رکھی ہے اور پلاٹوں کو عوام الناس میں فروخت کیا جا رہا ہے حالانکہ ایل ڈی اے نے1983میں یہ جگہ ایکوائر کی تھی اور اس پر سڑکیں ،واٹر سپلائی اور سیوریج کے علاوہ بجلی کی سہولت بھی مہیا کی تھی اس حوالے سے جب ایل ڈی اے حکام سے مؤقف لیا گیا تو ان کا کہنا تھا کہ ا س جگہ پر اتھارٹی نے2مرتبہ کارروائی کی ہے اور تمام تعمیرات کو مسمار بھی کیا تھا لیکن بعد میں لینڈ مافیا عدالت میں چلا گیا اور اب یہ کیس عدالت میں چلا گیا اور اب اس کا فیصلہ بھی عدالت ہی کر ے گی،جب پوچھا گیا کہ پلاٹ مالکان کا کیا بنے گا توانہوں نے بتایا کہ ایل ڈی اے کے کچھ گھر وہاں تعمیر ہیں باقی عدالت کے ٖفیصلے کے بعد ہو گا ۔اس حوالے سے فیصل گارڈن کے ڈویلپرز سے بات کی گئی تو انہوں نے بتایا کہ یہ جگہ ایل ڈی اے نے ایکوائر نہیں کی تھی باوجود اس کے ایل ڈی اے نے موقع پر ڈویلپمنٹ کی تھی جب کہ یہ جگہ ہماری ہے اس لئے ہم عدالت میں گئے ہیں جس کے فیصلے کا انتظار ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1