کھاد سکینڈل میں گرفتاری عدالتی اجازت سے مشروط ، نیب کو ہدایت

کھاد سکینڈل میں گرفتاری عدالتی اجازت سے مشروط ، نیب کو ہدایت

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائیکورٹ نے نیشنل فرٹیلائزر کمپنی کے سٹور انچارج کی ایک ارب 62 کروڑ کے کھاد سکینڈل میں گرفتاری عدالتی اجازت سے مشروط کرتے ہوئے نیب کو ہدایت کی ہے کہ گرفتاری سے قبل عدالت سے اجازت لی جائے۔جسٹس طارق عباسی کی سربراہی میں دو رکنی بنچ نے سٹور انچارج حامد ناصر کی درخواست پر سماعت کی،درخواست گزار کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ نیب نیشنل فرٹیلائزر کمپنی اور کھاد ڈیلروں کیخلاف ایک ارب 62کروڑ کے کھاد سکینڈل کی تحقیقات کر رہا ہے جس میں متعدد افراد گرفتار بھی ہو چکے ہیں، خدشہ ہے کہ سٹور انچار ج کو بھی گرفتار کر لیا جائے گا حالانکہ درخواست گزار کا کھاد کی فروخت سے کوئی تعلق نہیں ہے، نیب کے وکیل نے بنچ کو آگاہ کی کہ درخواست گزار کیخلاف کوئی انکوائری زیر التواء نہیں ہے اور نہ ہی فی الوقت نیب کو اسکی گرفتار ی مطلوب ہے۔

انکوائری،زیر التوا

مزید : صفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...