منتخب چئیرمین اور نمائندوں کی کامیابی کا نوٹیفیکیشن روک دیا گیا

منتخب چئیرمین اور نمائندوں کی کامیابی کا نوٹیفیکیشن روک دیا گیا

 لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائی کورٹ نے بلدیاتی انتخابات میں خواتین کو ووٹ ڈالنے کی اجازت نہ دینے پر ننکانہ صاحب کی یونین کونسل نمبر51کے چیئرمین اوردیگر نمائندوں کی کامیابی کا نوٹیفکیشن جاری کرنے سے روک دیا ہے ۔مسٹر جسٹس فرخ عرفان خان نے رخسانہ عباس نامی خاتون کی درخواست پر الیکشن کمشن سے بھی جواب طلب کرلیا ہے ۔فاضل جج نے قرار دیا کہ خواتین کو ووٹ ڈالنے سے روکنے کا عمل انتہائی شرمناک ہے۔ ووٹ ڈالنا ہر شہری کا بنیادی حق ہے اور کسی کو زبردستی اس کے اس حق سے محروم نہیں کیا جاسکتا۔ آج اکیسویں صدی ہے اور لوگوں کو پتھر کے زمانے میں دھکیلا جارہا ہے۔ اس طرح کے واقعہ سے ملک کی عالمی سطح پر بدنامی ہوتی ہے۔درخواست گزار خاتون کے وکیل غلام عباس حیدری نے عدالت کو بتایا کہ ضلع ننکانہ کی یونین کونسل 51کے وارڈ نمبر ایک میں خواتین کے 296 رجسٹرڈ ووٹ ہیں لیکن ایک بھی خاتون کو وارڈ میں ووٹ نہ ڈالنے نہیں دیا گیا جو بنیادی حقوق کی خلاف ورزی ہے۔ فاضل جج نے اس کیس کی مزید سماعت کے لئے 2دسمبر کی تاریخ مقرر کی ہے ۔

ووٹ سے روکنا

مزید : صفحہ آخر