سانحہ ماڈل ٹاؤن انکوائری رپورٹ جومنظر عام پر لانا ضروری نہیں سرکاری وکیل کے دلائل

سانحہ ماڈل ٹاؤن انکوائری رپورٹ جومنظر عام پر لانا ضروری نہیں سرکاری وکیل کے ...

 لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہورہائیکورٹ کے مسٹرجسٹس خالد محمود خان کی سربراہی میں قائم فل بینچ نے سانحہ ماڈل ٹاون کی انکوائری رپورٹ منظر عام پر لانے اور جوڈیشل کمیشن کی تشکیل کے خلاف درخواستوں پر مزید سماعت آج تک ملتوی کر دی ۔گزشتہ روز پنجاب حکومت کے وکیل خواجہ حارث کے دلائل جاری تھے کہ عدالتی وقت ختم ہونے پر مزید سماعت آج ملتوی کر دی گئی ۔ پنجاب حکومت کے وکیل کی جانب سے موقف اختیار کیا گیا تھاکہ سانحہ ماڈل ٹاؤن جوڈیشل کمیشن کی تشکیل سے قبل چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ سے مشاورت نہیں کی گئی۔ جبکہ اس معاملے کی انکوائری حکومت نے اپنی سہولت کے لئے کروائی تاکہ درست حقائق سامنے آ سکیں۔ تاہم اس رپورٹ کو عوام کے سامنے لایا جانا ضروری نہیں۔ درخواست گزاروں کا کہنا ہے کہ حکومت سانحہ ماڈل ٹاون کی انکوائری رپورٹ قصداً منظر عام پر نہیں لا رہی ، رپورٹ میں حکومتی وزراء کو بھی ذمہ دار ٹھہرایا گیا ہے، درخواستوں میں مزید موقف اختیار کیا گیا ہے کہ جوڈیشل کمیشن کی رپورٹ منظر عام پر لانے کا حکم دیا جائے تا کہ عوام کو اس واقعہ کے حوالے سے اصل حقائق کا علم ہو سکے۔

انکوائری رپورٹ

مزید : صفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...