بنگلہ دیش ، رہنماؤں کی پھانسی سیاسی انتقام ہے، عبداللہ حسین ہارون

بنگلہ دیش ، رہنماؤں کی پھانسی سیاسی انتقام ہے، عبداللہ حسین ہارون

کراچی(اسٹاف رپورٹر)اقوام متحدہ کے سابق سفیر اورمعروف سینئر سیاستدان عبداللہ حسین ہارون نے بنگلادیش میں حزب اختلاف کے 2 رہنماؤں علی احسن محمد مجاہد اورصلاح الدین قادر چوہدری کی پھانسیوں کیخلاف بنگلہ دیشی وزیراعظم حسینہ واجد کی حکومت کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے۔ اور حسینہ واجدحکومت کا سیاسی انتقام دہشت گردی کی بدترین مثال ہے۔ اپنے بیان میں ان کا کہنا تھا کہ بنگلہ دیش میں ظلم وجبر کا راج ہے قانون اور انصاف کا قتل کیا گیااور پاکستان سے وفا کرنیوالوں کو سزائیں دی جا رہی ہیں۔حسینہ واجدحکومت کو شہید ذوالفقار علی بھٹو اورشیخ مجیب الرحمن کے درمیان طے پانے والے معاہدے کی پاسداری کا خیال رکھنا چاہیے تھا۔انہوں نے کہا کہ گزشتہ اور موجودہ حکومت نے انتہائی سرد مہری اور بے حسی کا مظاہرہ کیا جن لوگوں نے پاکستان کو ٹوٹنے سے بچانے کے لیے نہ صرف پاکستانی فوج کے شانہ بشانہ لڑتے ہوئے71ء میں ہزاروں جانوں کا نذرانہ پیش کیا بلکہ گزشتہ 42 سال سے پاکستان سے وفا اور بھارتی بالادستی کے خلاف جدوجہد کرنے کے جرم میں قربانیاں دے رہے ہیں۔ صلاح الدین قادر چودھری اور علی احسن مجاہد کا واحد جرم پاکستان سے محبت ہے جس کی انہیں اتنی بڑی سزا دی گئی۔ سیاسی مخالفین کو انتقام کا نشانہ بنانے کی یہ روش نہایت افسوسناک ہے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر