افغان مہاجرین کو مزید 2 سال پاکستان میں قیام کی اجازت دینے کا فیصلہ

افغان مہاجرین کو مزید 2 سال پاکستان میں قیام کی اجازت دینے کا فیصلہ
افغان مہاجرین کو مزید 2 سال پاکستان میں قیام کی اجازت دینے کا فیصلہ

اسلام آباد(اے این این) حکومت ملک میں رہائش پذیر 14 لاکھ 50 ہزار سے زائد رجسٹرڈ افغان مہاجرین کی رضا کا رانہ واپسی 31 دسمبر 2015 تک مکمل کرنے میں ناکام ہوگئی، 2 سال مزید قیام کیلئے پلان منظوری کیلئے وفاقی کابینہ کو بھجوادیاگیا۔ پاکستان میں قیام پذیر افغان مہاجرین کی وطن واپسی کی ڈیڈ لائن 31 دسمبر 2015 مقرر کی گئی تھی، 2002 سے جاری رضاکارانہ واپسی کے تحت اب تک پاکستان سے 39 لاکھ افغان پناہ گزین اپنے ملک واپس جاچکے ہیں، رواں سال اب تک 60 ہزار افغان مہاجرین رضاکارانہ طورپر و طن واپس جا چکے ہیں۔ ذرائع نے ایک نجی ٹی وی کو بتایا کہ وفاقی حکومت نے 2012 میں پاکستان میں قیام پذیر رجسٹرڈ، 15 لاکھ سے زائد افغان مہاجرین کی وطن واپسی کیلئے ڈیڈ لائن 31 دسمبر 2015 مقرر کی تھی تاہم تاحال افغان مہاجرین کی وطن واپسی نہیں ہو سکی۔ ذرائع کے مطابق افغان حکومت ، یواین ایچ سی آر او وزارت سیفران کے سہ فریقی کمشن نے پاکستان میں قیام پذیر رجسٹرڈ افغان مہاجرین کی وطن واپسی کا نیا پلان تیار کیا ہے جس پر وزارت سیفران نے چاروں صوبوں کے حکام سے مشاورت کے بعد مہاجرین کی وطن واپسی کا نیا دو سالہ پلان حتمی منظوری کیلئے وفاقی کابینہ کو بھجوادیا ہے اور وفاقی کابینہ کے آئندہ اجلاس میں پلان کی منظوری دے دی جائے گی۔

مزید : اسلام آباد

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...