دوران پرواز زمین پر کھڑے شخص کی ایسی حرکت کہ پائلٹ کی بینائی چلی گئی، ایسا کیسے ممکن ہے؟ آپ بھی انتہائی حیرت انگیز واقعہ کے بارے میں جانئے

دوران پرواز زمین پر کھڑے شخص کی ایسی حرکت کہ پائلٹ کی بینائی چلی گئی، ایسا ...
دوران پرواز زمین پر کھڑے شخص کی ایسی حرکت کہ پائلٹ کی بینائی چلی گئی، ایسا کیسے ممکن ہے؟ آپ بھی انتہائی حیرت انگیز واقعہ کے بارے میں جانئے

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

لندن (نیوز ڈیسک) آج کل لوگوں نے لیزر لائٹ کو بھی کھلونا سمجھ لیا ہے اور ننھے بچے بھی اس کے ساتھ کھیلتے نظر آتے ہیں لیکن یہ چیز کس قدر خطرناک ثابت ہوسکتی ہے اس کا اندازہ اس بات سے لگائیے کہ برٹش ائیرلائن کا ایک پائلٹ کئی کلومیٹر کی دوری سے آنے والی لیزر لائٹ آنکھ میں پڑنے سے بینائی سے محروم ہوگیا ہے۔

اخبار دی میٹرو کے مطابق یہ بدقسمت پائلٹ لیزر لائٹ کا شکار اس وقت بنا جب اس کا جہاز ہیتھرو ائیرپورٹ پر لینڈنگ کے لئے بڑھ رہا تھا۔ برٹش ائیرلائن پائلٹس ایسوسی ایشن کے جنرل سیکرٹری جم میک اولسن کا کہنا ہے کہ لیزر لائٹ کو کاک پٹ کی طرف فوکس کیا گیا جو کو پائلٹ کی آنکھ میں پڑی اور اس کی ایک آنکھ کا ریٹینا مکمل طور پر جل گیا۔ ان کا کہنا تھا کہ یہ ان کے علم میں آنے والا خطرناک ترین نقصا ن ہے جو لیزر لائٹ سے ہوا ہے۔

مزید جانئے: فاصلے سمٹ گئے، دنیا کا سب سے تیز رفتار مسافر طیارہ، اتنی رفتار کہ یقین کرنا مشکل

میک اولسن کا کہ بھی کہنا تھا کہ یقینا اس واقعے میں فوجی مقاصد کے لئے استعمال ہونے والی لیزر لائٹ استعمال کی گئی تھی جو کاک پٹ کے شیشے میں سے گزرتی ہوئی پائلٹ کی آنکھ کو ضائع کرگئی۔ میک اولسن کا کہنا ہے کہ لیزرلائٹ کو جہاز کے کاک پٹ پر فوکس کرنے کا یہ پہلا واقعہ نہیں ہے بلکہ یہ ایک تشویشناک بات ہے کہ گزشتہ ایک سال کے دوران ان کے نصف سے زیادہ پائلٹوں نے جہاز پرلیزر لائٹ مارے جانے کی شکایت کی ہے، لیکن خوش قسمتی سے اس سے پہلے ایسا خطرناک واقعہ پیش نہیں آیا۔

مزید : ڈیلی بائیٹس