بوریت کا شکار خواتین قیدیوں نے ایسا شرمناک کام شروع کردیا کہ حکام کی ہوائیاں اڑ گئیں، بڑی شرمندگی کا سامنا

بوریت کا شکار خواتین قیدیوں نے ایسا شرمناک کام شروع کردیا کہ حکام کی ہوائیاں ...
بوریت کا شکار خواتین قیدیوں نے ایسا شرمناک کام شروع کردیا کہ حکام کی ہوائیاں اڑ گئیں، بڑی شرمندگی کا سامنا

  

سان ہوان (نیوز ڈیسک)جیل کی زندگی یقینا آسان نہیں مگر پورٹوریکو کی ایک زنانہ جیل میں قید کچھ شوخ مزاج خواتین نے جیل کی بوریت بھری زندگی کو رنگین بنانے کے لئے ایسا طریقہ استعمال کر دیا کہ جیل میں ہی نہیں پورے ملک میں کھلبلی مچادی۔

اخبار ڈیلی سٹار کے میڈیا کے مطابق بایامون جیل میں قید کچھ دلکش دوشیزاﺅں نے کسی طرح سے جیل میں ایک سمارٹ فون منگوایا اور پھر اپنی نیم برہنہ اور برہنہ تصاویر بنا کر انٹرنیٹ پر ڈال دیں۔ اخبار کے مطابق خواتین کی تصاویر انٹرنیٹ پر شائع ہوتے ہی کئی بڑے اخبارات اور میگزینوں کی زینت بھی بن گئیں جس کے بعد پورٹوریکو کے سیکیورٹی حکام کی دوڑیں لگ گئیں۔

مزید جانئے: تضحیک کا نشانہ بننے والی برطانوی لڑکی کم عمر ترین حسینہ بن گئی

مقامی میڈیا کے مطابق جیل میں بڑے پیمانے پر سرچ آپریشن کیا گیا جس کے بعد ناصرف تصاویر بنانے والی دوشیزاﺅں کا سراغ لگالیا گیا بلکہ غیر قانونی طور پر جیل میں منگوایا گیا سمارٹ فون بھی برآمد کرلیا گیا۔ قابل اعتراض تصاویر بنوانے والی دو خواتین کے پاس چاقو اور دیگر ہتھیار بھی برآمد ہوئے۔ جیل حکام کا کہنا ہے کہ خواتین کی انتہائی واضح تصاویر کی وجہ سے انہیں بآسانی شناخت کرلیاگیا اور اب ان کی قید میں مزید اضافہ متوقع ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس