فرانسیسی شخص وراثت میں ملنے والے گھر سے100کلو سونا مل گیا

فرانسیسی شخص وراثت میں ملنے والے گھر سے100کلو سونا مل گیا
فرانسیسی شخص وراثت میں ملنے والے گھر سے100کلو سونا مل گیا

  


پیرس (مانیٹرنگ ڈیسک) اوپر والا جب بھی دیتا، دیتا چھپر پھاڑ کے۔ یہ کہاوت تو سب نے سنی ہے لیکن اس کا عملی مظاہرہ فرانس میں دیکھنے میں آیا جہاں ایک شخص کو اپنے رشتے دار کی جانب سے وراثت میں ملنے والے گھر سے 100 کلو سونا ملا ہے۔تفصیلات کے مطابق اس نامعلوم شخص کو سونے کے چمکتے ٹکڑے فرنیچر، ململ کے کپڑوں اور باتھ روم سمیت گھر کی مختلف جگہوں سے ملے جس کی مالیت 30 لاکھ 70 ہزار ڈالر بتائی جا رہی ہے۔ نیلامی کرنے والے نکولس فائرفورٹ نے غیر ملکی خبر رساں ادارے کو بتایا کہ سونے کے کل 5000 ٹکڑے تھے جبکہ 12 کلو سونے کی 2 سلاخیں اور ایک کلو سونے کے چھوٹے چھوٹے ٹکرے تھے۔‘‘نکولس فائرفورٹ کا کہنا ہے کہ سونا چھپانے میں انتہائی مہارت سے کام گیا تھا اور یہی وجہ ہے کہ وہ اس کی موجودگی سے یکسر لاعلم رہے۔ سونے کے سکے اور ٹکڑے تب نظر آئے جب نئے مالک نے گھر میں رکھی چیزوں کو ہلانا جلانا شروع کیا۔ رپورٹ کے مطابق ابتداء میں انہیں فرنیچر میں رکھا ایک صندوق ملا جس میں سونے کے سکے چھپائے گئے تھے اور سب سے آخر میں اس گھر میں آنے والے نئے مالک نے سونے کی سلاخیں اور ٹکڑے دیکھے جس کے بعد انہوں نے اپنے وکیل اور اس سارے خزانے کا حساب لگانے کیلئے ایک شخص کو بلا لیا۔اس گھر سے سونے کے ساتھ ملنے والے سرٹیفکیٹس کے مطابق یہ سونا 1950ء سے 1960ء کے دوران خریدا گیا تھا تاہم ایک مقامی اخبار کا کہنا ہے کہ ڈھیر سارا سونا ملنے کی کی اس خوشی کیساتھ ساتھ نئے مالک کو صدمہ بھی پہنچ سکتا ہے کیونکہ اگر اس مکان کے اصل مالک نے اپنے اثاثے ظاہر نہیں کئے تھے تو پھر انہیں اس خزانے پر 45 فیصد وراثتی ٹیکس ادا کرنا ہو گا۔

مزید : صفحہ آخر