گھریلو جھگڑے پر بیوی قتل، 2خواتین سمیت 4افراد حادثات کی بھینٹ چڑھ گئے

گھریلو جھگڑے پر بیوی قتل، 2خواتین سمیت 4افراد حادثات کی بھینٹ چڑھ گئے

محسن وال، شجاع آباد، رحیم یار خان، ترنڈہ محمد پناہ (نمائندگان) شوہر نے گھریلو جھگڑے پر بیوی کو قتل کردیا 2خواتین سمیت 4 افراد ٹریفک حادثات کی بھینٹ چڑھ گئے اس سلسلہ میں محسن وال سے نمائندہ پاکستان اور نامہ نگار کیمطابق میاں چنوں کے نواحی گاؤں 98پندرہ ایل میں خاوند محمد اسلم ولد حبیب نے اپنی بیوی صغیراں مائی کو گھریلو جھگڑا پر تیز دھار آلہ قتل کردیا،پولیس تھانہ چھب کلاں نے کاروائی کرتے ہوئے ملزم کو گرفتار کر کے مقدمہ درج کرلیا،جبکہ نعش کو (بقیہ نمبر45صفحہ12پر )

پوسٹمارٹم کیلئے ہسپتال منقتل کردیا۔شجاعباد سے نمائندہ خصوصی کیمطابق کیول والا پل شجاع آباد میں تیز رفتار بے قابو ٹرک سڑک پر بیٹھے افراد پر چڑھ گیا جس کے نتیجے میں ایک شخص ہلاک چار شدید زخمی ٹرک ڈرائیور فرار زخمیوں کو نشتر ہسپتال منتقل کر دیا گیا ہے جہاں پر ان کی حالت تشویشناک بتائی جاتی ہے جاں بحق ہونے والوں میں ساٹھ سالہ حاجی محمد شامل ہے جو نہر کے کنارے جوتے پالش کرتا تھا واضع رہے کہ قبل ازیں اسی جگہ کے بی حادثہ میں حاجی محمد کا جواں سالہ بیٹا عین اسی جگہ جاں بحق ہوا تھارحیم یار خان، ترنڈہ محمد پناہ سے بیورونیوز اور نمائندہ خصوصی کیمطابق پہلا حادثہ جن پور کی رہائشی17سالہ دوشیزہ حفضہ بی بی جو کہ اپنے چچا اعجازاحمد کے ہمراہ خان بیلہ کے نزدیک سکول جارہی تھی کہ اسی دوران پیچھے سے آنے والی تیز رفتار مسافربس نے ٹکر ماردی جس کے نتیجہ میں حفضہ بی بی شدید زخمی ہوگئی۔ دوسرا حادثہ راجن پور کی رہائشی 30 سالہ صاحب مائی کے ساتھ پیش آیا جو موٹرسائیکلوں کے تصادم میں شدید زخمی ہوگئی جبکہ تیسرا حادثہ سٹلائیٹ ٹاؤن کے رہائشی22 سالہ احسن علی کے ساتھ پیش آیا جو اپنے چھوٹے بھائی سعد علی کے ہمراہ موٹرسائیکل پرسوار ہوکر کام کے سلسلے میں صادق آباد جارہے تھے کہ اسی دوران نامعلوم کارسوار نے کراسنگ کرتے ہوئے سائیڈ مار کر سڑک پر گرادیا جس کے نتیجہ میں دونوں بھائی احسن علی اور سعد علی شدیدزخمی ہوگئے۔ زخمی ہونے والی ان افراد کو ورثاء نے طبی امداد کے لئے شیخ زید ہسپتال منتقل کیا جہاں طبی امداد کے باوجود ایمرجنسی وارڈ میں حفضہ بی بی، آئی سی یووارڈ میں صاحب مائی اور ٹراما سینٹرمیں احسن علی زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑگئے جبکہ سعد علی کی حالت بدستور تشویشناک بیان کی جارہی ہے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر