مواخذے کی کارروائی سینیٹ میں کی جائے: ٹرمپ کا مطالبہ

مواخذے کی کارروائی سینیٹ میں کی جائے: ٹرمپ کا مطالبہ

  



واشنگٹن(آئی این پی)امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنے خلاف مواخذے کی کارروائی امریکی سینیٹ میں ہونے کی خواہش ظاہر کردی۔انہوں نے کہا کہ میں اپنے خلاف مواخذے کا ٹرائل چاہتا ہوں جو امریکی سینیٹ میں ہو۔الجزیرہ میں شائع رپورٹ کے مطابق فوکس نیوز چینل کے فاکس اینڈ فرینڈز پروگرام میں ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا کہ مجھ پر لگے تمام الزامات ختم ہوجائیں گے۔امریکی صدر نے کہا کہ سچ کہوں تو میں ٹرائل چاہتا ہوں۔ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا کہ انہیں نہیں لگتا کہ ایوان نمائندگان ان پر مواخذہ کرے گا۔اس پر مزید انہوں نے کہا کہ مجھے لگتا ہے کہ اگر ان کے پاس کچھ بھی نہیں ہے تو انہیں مواخذہ کرنے میں بہت مشکل ہوگی۔واضح رہے ڈونلڈ ٹرمپ کا بیان ایسے وقت پر سامنے آیا ہے جب مواخذے کی تحقیقات میں دو ہفتوں کی عوامی سماعت کے دوران 12 گواہوں نے بیانات ریکارڈ کرالیے ہیں۔ڈیموکریٹک کے زیرقیادت ایوان اس بات کی تحقیقات کررہا ہے کہ آیا ڈونلڈ ٹرمپ نے یوکرائن کو کسی سیاسی حریف کے خلاف تحقیقات کے لیے دبا ڈال کر اپنے اقتدار و اختیارات کا غلط استعمال کیا۔دریں اثنا امریکی صدر ٹرمپ نے اپنے مواخذے کی سماعت میں گواہی دینے والی سابق سفیر میری یووانوچ پر ایک انوکھا الزام عائد کرتے ہوئے کہا ہے کہ یووانوچ یوکرین میں قائم امریکی سفارت خانے میں میری تصویر لگانا نہیں چاہتی تھیں، یہ ایک اصول ہے کہ آپ امریکی صدر کی تصویر سفارتخانے میں لگائیں، وہ کوئی فرشتہ نہیں تھیں، ایک خاتون ہیں، ان کی کرپشن کے خلاف کاوشوں کی وجہ سے انہیں بااثر یوکرینین کے غیض و غضب کا سامنا کرنا پڑا جس کی وجہ سے انہیں عہدے سے ہٹایا گیا۔برطانوی نشریاتی ادارے کے مطابق یوکرین میں امریکا کی سابق سفیر میری یووانوچ سے متعلق ٹرمپ نے دعوی کیا ہے کہ میری نے ان کی تصویر سفارتخانے میں لگانے سے انکار کیا تھا۔بی بی سی کے مطابق فوکس نیوز کو انٹرویو دیتے ہوئے ٹرمپ نے کہا کہ میری یووانوچ یوکرین میں قائم امریکی سفارت خانے میں میری تصویر لگانا نہیں چاہتی تھیں۔امریکی صدر نے سفیر کی برطرفی کا بھرپور دفاع کیا تاہم انہوں نے اس حوالے سیمزید تفصیلات بتانے سے گریز کیا۔ٹرمپ کا مزید کہنا تھا کہ ہر کوئی کہتا ہے یہ بہت شاندار سفیر تھیں لیکن وہ سفارتخانے میں میری تصویر نہیں لگائیں گی، وہ سفارتخانے کی انچارج تھیں اور انہوں نے تقریبا دو سال کا عرصہ گزارا۔امریکی صدر نے الزام لگایا کہ میری یووانوچ نے مجھے برا بھلا کہا، وہ میرا دفاع نہیں کریں گی جب کہ مجھے سفیر کی تبدیلی کا اختیار ہے۔ٹرمپ کا کہنا تھاکہ یہ ایک اصول ہے کہ آپ امریکی صدر کی تصویر سفارتخانے میں لگائیں، وہ کوئی فرشتہ نہیں تھیں، ایک خاتون ہیں۔یاد رہے کہ صدر ٹرمپ نے یوکرین میں امریکی سفیر میری یووانوچ کو مئی میں ان کے عہدے سے ہٹایا۔برطرفی پر ٹرمپ کے خلاف مواخذے کی سماعت میں سابق سفیر نے گواہی دیتے ہوئے کہا کہ ان کی کرپشن کے خلاف کاوشوں کی وجہ سے انہیں بااثر یوکرینین کے غیض و غضب کا سامنا کرنا پڑا جس کی وجہ سے انہیں عہدے سے ہٹایا گیا

مزید : علاقائی