امریکہ نے ایرانی وزیر اطلاعات پر پابندی عائد کردی

امریکہ نے ایرانی وزیر اطلاعات پر پابندی عائد کردی

  



واشنگٹن(آئی این پی)امریکا نے ایران میں پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کے خلاف 5 روز تک جاری رہنے والے احتجاج کے دوران انٹرنیٹ بند کرنے پر ایران کے وزیر اطلاعات پر پابندیاں عائد کردیں۔برطانوی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق ایران میں احتجاج کے دوران انٹرنیٹ کی بندش سے مظاہرین کی جانب سے سوشل میڈیا پر ویڈیوز پوسٹ کرکے حمایت حاصل کرنا مشکل ہوگیا تھا۔علاوہ ازیں انٹرنیٹ کی بندش سے ایران میں ہونے والے احتجاج کی شدت سے متعلق مصدقہ اطلاعات کا حصول بھی مشکل ہوگیا تھا۔تاہم ایران نے 2 روز قبل کہا تھا کہ انٹرنیٹ بحال کرنے کا آغاز کردیا گیا ہے۔امریکا کے محکمہ خزانہ کے مطابق ایرانی وزیر محمد جواد آذری جھرومی نے عہدے پر رہتے ہوئے ایران کی ' جارحانہ انٹرنیٹ سنسرشپ کی پالیسی کو بڑھادیا ہے۔امریکی محکمے نے ایرانی وزیر کو سابق انٹیلی جنس عہدیدار قرار دیا جو اپوزیشن کارکنوں کے خلاف نگرانی میں ملوث رہے۔سیکریٹری خزانہ اسٹیون منوچن نے ایک بیان میں کہا کہ ' ایران کے رہنما جانتے ہیں کہ آزاد انٹرنیٹ سے ان کی قانونی حیثیت بے نقاب ہوجائے گی اس لیے وہ حکومت مخالف مظاہروں کو روکنے کے لیے انٹرنیٹ تک رسائی بند کردیتے ہیں '۔

مزید : علاقائی