فنکار برادری کی چچا کی سگی بھتیجی کے ساتھ بداخلاقی اور قتل کی مذمت

  فنکار برادری کی چچا کی سگی بھتیجی کے ساتھ بداخلاقی اور قتل کی مذمت

  



لاہور(فلم رپورٹر)شوبز کے مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والی شخصیات نے درندہ صفت چچاکی سگی بھتیجی کے ساتھ بداخلاقی اور قتل کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے۔شوبز شخصیات کا کہنا ہے کہ ایسے درندے کو سرعام پھانسی پر لٹکایا جائے وزیر اعظم عمران خان کو ایسے واقعات کو خود نوٹس لینا چاہیے جب تک ظالموں کو ان کے کئے کی سزا نہیں ملے گی اس وقت تک ایسے واقعات رونما ہوتے رہیں گے۔یادرہے کہ راولپنڈی کے نواحی علاقہ میں ولی اللہ نامی شخص نے اپنی ننھی مْنی بھتیجی کے ساتھ بد اخلاقی کر ڈالی۔ 7 سالہ معصوم سِدرہ کے وہم و گمان میں بھی نہ تھا کہ اْس کی عزت کا رکھوالا چچا ہی اْس کو یوں بے رحمی سے بد اخلاقی کا نشانہ بنا ڈالے گا۔سفاک ملزم نے یہیں پر بس نہ کی بلکہ اپنی ہوس پْوری کرنے کے بعد اْسے قتل بھی کر ڈالا اور پھر گھر سے باہر نکل گیا۔ جب سدرہ کے والدین نے اپنی بچی کو خون میں لت پت دیکھا تو اْن پر قیامت سے پہلے ہی قیامت ٹْوٹ پڑی۔ شاہد حمید،شان،معمر رانا،مسعود بٹ،پرویز کلیم،میگھا،ماہ نور،شاہدہ منی،لائبہ علی،سہراب افگن،سٹار میکر جرار رضوی،یار محمد شمسی صابری،گلفام،ہانی بلوچ،اچھی خان،ذویا قاضی،مایا سونو خان،ڈیشی راج،آغا قیصر عباس،سدرہ نور،ندا چوہدری،آفرین خان،آفرین پری،آشا چوہدری،عامر راجہ،بی جی،سفیان احمد،انوسنٹ اشفاق،محرمہ علی،عباس باجوہ،آغا حیدر،شین فریال،نادیہ علی،سوھنی بلوچ،اشرف خان،عذرا آفتاب،حیدر سلطان،بابرہ علی،تابندہ علی،ڈاکٹر اجمل ملک،مختار احمد چوہان،فیصل بخاری،چوہدری اعجاز کامران،قیصر ثناء اللہ خان،حاجی عبد الرزاق،پریسہ،حنا ملک،شہزاد چندا،ہنی البیلا،حسن مراد،امان اللہ،نجم زیدی،ثمینہ بٹ،سرفراز وکی،بینا سحر،عائشہ جاوید،ابرار ہاشمی،وقاص کیدو،زری لعل،شہہ پارہ،ستارہ بیگ،لکی ڈیئر،طاہر نوشاد،مختار چن،اسد مکھڑا،شجر عباس،نواز انجم،احمد نواز،محسن گیلانی،دلاور ملک،عباس اشرف،افشین اشرف،بینا چوہدری اور دیگر کا کہنا ہے کہ بچوں پر مظالم ڈھانے والے کسی رحم کے محتاج نہیں ہیں۔ہمارے معاشرے میں دن بدن بچوں کے ساتھ برا سلوک بڑھ رہا ہے اس حوالے سے ہماری حکومت کو سخت اقدامات کرنا ہوں گے۔یہ ظالم لوگ کس بے غیرتی سے جرم کرتے ہیں اور بعد میں یہ کہہ کر کہ غلطی ہوئی ان کو معاف کردیا جائے۔یہ انسان نہیں جانور سے بھی بدتر ہیں۔

مزید : کلچر