پاکستان چین کیساتھ دوستی سے پیچھے ہٹے گا نہ واشنگٹن بیجنگ کشیدگی کا حصہ بنے گا:اسد عمر

پاکستان چین کیساتھ دوستی سے پیچھے ہٹے گا نہ واشنگٹن بیجنگ کشیدگی کا حصہ بنے ...

  



کراچی (سٹاف رپورٹر، مانیٹرنگ ڈیسک) وفاقی وزیربرائے منصوبہ بندی اسد عمر کا کہنا ہے چین کیساتھ پاکستان کے تعلقات کسی کیخلاف نہیں، امریکی خارجہ امور کی نائب سیکرٹری ایلس ویلز کے پاک چین اقتصادی راہداری پر خدشات بے بنیاد ہیں۔گزشتہ روزکراچی میں تحریک انصا ف کے ایم پی اے خرم شیر زمان کیسا تھ پریس کانفرنس کرتے ہوئے وفاقی وزیر منصوبہ بندی کا کہنا تھا   کہ پاکستان چین سے دوستی سے پیچھے نہیں ہٹے گا لیکن امریکہ اور چین کے درمیان کسی قسم کی کشمکش کا حصہ بھی نہیں بنے گا۔ ان کا کہنا تھا کہ چین ہمارا دیرینہ ساتھی ضرور ہے مگر یہ دوستی کسی کے خلاف نہیں ہے۔’اگر چین ہمارے ملک میں سرمایہ کاری کر رہا ہے تو اس کا یہ مطلب نہیں ہے کہ اب ہم امریکہ کے خلاف ہو گئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہسی پیک کا پہلا فیز مکمل کیا گیا، چین سے لیے گئے کمرشل قرضو ں میں بھی کمی آئیگی۔ پاک چین اقتصادی راہداری ہماری اوّلین ترجیح ہے اوراسے مزید آگے بڑھائیں گے۔ اسد عمر کا کہنا تھا سی پیک کے تحت پاکستا ن پر 4.9 ارب ڈالرقرض ہے۔چینی ٹیکنالوجی سے استفادہ  کرینگے کیونکہ ہمسایہ ملک تیزی سے ٹیکنالوجی کی دنیا میں آگے بڑھ رہا ہے۔چین نے ہمیشہ مشکل وقت میں ساتھ دیا، دوست ممالک کیساتھ تعلقات میں کوئی جھول نہیں آئے گا۔ایک سوال کے جواب میں ان کا کہنا تھا امریکی خارجہ امور کی نائب سیکرٹری ایلس ویلز کا پاک چین اقتصادی راہداری پر تجزیہ کسی طور بھی درست نہیں۔ کسی کے کہنے پر دوست ملک کیساتھ تعلقات خراب نہیں کر سکتے۔ بیرونی قرضوں کے بوجھ سے معاشی ترقی متاثر ہو رہی ہے۔ گردشی قرضے ہمارے لیے سب سے بڑا چیلنج ہے۔ پاکستانی ٹیکس گزاروں نے 74ارب ڈالر غیرملکی قرضہ اداکرنا ہے۔ 2 سے تین سال کے دوران تجارتی خسارے میں کمی آئے گی۔ ہمارا ٹرین کا نظام آہستہ آہستہ خراب ہوا۔ چاہتے ہیں امریکہ، یورپ سے بھی پاکستا ن میں سرمایہ کاری آئے، امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے بھی افغانستان میں پاکستان کے کردار کو سراہا، چاہتے ہیں بھارت میں بھی ایسی حکومت آئے جو خطے میں امن کی خواہاں ہو۔

اسد عمر

مزید : صفحہ اول