مظاہروں سے حکومت نہیں جائیگی، عمران خان لہجے میں نرمی لائیں، طاہر محمود اشرفی

  مظاہروں سے حکومت نہیں جائیگی، عمران خان لہجے میں نرمی لائیں، طاہر محمود ...

  



ملتان(سپیشل رپورٹر)پاکستان علماء کونسل کے سربراہ و متحدہ علماء بورڈ کے چیئرمین حافظ طاہر محمود اشرفی نے کہا ہے کہ پارلیمانی نظام بہتر حالات اتنے خراب نہیں کہ صدارتی نظام لایا جائے مظاہروں،تشدد یا انارکی پھیلانے سے نہ پہلے حکومت گئی اور نہ جاسکتی ہے عمران خان کو چاہیئے کہ وہ بھی اپنے لہجے میں نرمی اختیار کریں جبکہ اپوزیشن بھی اخلاقی روایات کا دامن نہ چھوڑے ناروے میں قرآن پاک کو نذرآتش کرنے کی کوشش کا واقعہ افسوسناک ہے اس پر وزا رت خارجہ کو بھرپور احتجاج کرنا چاہیئے امت مسلمہ آپس(بقیہ نمبر38صفحہ12پر)

کے اختلافات کی وجہ سے کمزور ہو چکی ہے صرف عمران خان کی ہی کوشش ہے کہ امت مسلمہ یکجا ہو جائے کشمیر ہو یا فلسطین امت مسلمہ کے مسئلے ہیں حکومت بڑھتی ہوئی مہنگائی پر قابو پانے کے لئے تو جہ دے آصف علی زرداری کو صحت کی بہترین سہولیات فراہم کی جائیں ان خیالات کا اظہار انہوں نے دورہ ملتان کے موقع پر سرکٹ ہاؤس میں پریس کانفرنس کے دوران کیا اس موقع پر علامہ انوارالحق مجاہد، علامہ عبد الحق مجاہد ودیگر بھی موجود تھے حافظ طاہر محمود اشرفی نے مزید کہا کہ ناروے میں قرآن پاک جلانے کی کوشش کی جتنی مذمت کی جائے وہ کم ہے امت مسلمہ تمام آسمانی کتابوں اور انبیاء پر مکمل ایمان رکھتی ہے اور تمام مذاہب کا احترام کیاجاتا ہے ایسا افسوسناک واقعہ بین المذاہب کے درمیان ہم آہنگی کی فضا کو سبوتاژ کرنے کی کوشش ہے قرآن پاک کو نذر آتش کرنے کے واقعہ پر وزارت خارجہ نہ صرف احتجاج کرے بلکہ اس اہم واقعہ کو اقوام متحدہ، اوآئی سی کے اجلاس میں اٹھایا جائے کہ جس کی وجہ سے امت مسلمہ کی دل آزاری ہوئی ہے انہوں نے کہا کہ ہم واضح طور پر سمجھتے ہیں کہ مظاہروں، تشدد یا انارکی پھیلانے سے نہ حکومت نہ گئی ہے اور نہ جا سکتی ہے 126روز تک عمران خان نے بھی اسلام آباد میں احتجاجی دھرنا دیا لیکن انہیں استعفیٰ نہیں ملا اور آج بھی احتجاج کرنے والوں کو استعفی ٰ نہیں مل سکتا ناموس رسالت ؐ قانون میں ترمیم کی کوئی جرات نہیں کرسکتا میاں نواز شریف کے دور میں ختم نبوت قانون میں ترمیم کی کوشش کی گئی جس پر ہم نے احتجاج کیا اگر ایسے حالات آئے تو پاکستان علماء کونسل پیچھے نہیں رہے گی لیکن ا یسے ایشوز پر قوم کو گمراہ نہ کیاجائے انہوں نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں کرفیو کو 108روز گزر چکے ہیں مظلوم کشمیریوں پر بھارتی ظلم و ستم جاری ہے ہم کشمیری بھائیوں کے شانہ بشانہ کھڑے ہیں ایک طرف مسئلہ کشمیر یوں کا گلہ گھونٹا جارہا ہے تو دوسری طرف امریکہ، اسرائیل فلسطین میں نئی یہودی بستیاں آباد کر رہے ہیں کشمیر اور فلسطین امت مسلمہ کے مسئلے ہیں لیکن امت مسلمہ آپس کے اختلافات کی وجہ سے کمزور ہو چکی ہے اور اس وقت وزیر اعظم عمران خان ہی ہیں جو چاہتے ہیں کہ امت مسلمہ آپس کے تمام تر ا ختلافات ختم کرکے یکجا ہو جائے پاکستان اور سعودی عرب کا موقف درست ہے اس پر او آئی سی کا اجلاس بلایا جائے میاں نواز شریف کو صحت کے سلسلے میں سہولیات دینے کے سلسلے میں ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ دونوں حضرات عوام کی قیادت کرتے ہیں سابق صدر آصف علی زرداری بھی یقینا بیمار ہیں انہیں بھی حکومت صحت کی بہترین سہولیات فراہم کرے تاہم لیڈر شپ کے لئے بھی سوال ہے کہ ملک میں ایک ایسا ہسپتال بھی ضرور ہونا چاہیئے جو قیادت کا علاج کرے ایک اور سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ بڑھتی ہوئی مہنگائی پر قابوپانے کے لئے حکومت توجہ دیانہوں نے کہا کہ سود کے خاتمے کے لئے کہیں نہ کہیں کوشش ضرور ہو رہی ہے ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ پارلیمانی نظام کی طرف ہی صورتحال ہے حالات اتنے خراب نہیں کہ صدارتی نظام لایاجائے انہوں نے کہا کہ متحدہ علماء بورڈ نے گذشتہ 9سالوں میں اتنا کام نہیں کیاجتنا 8ماہ میں کیا اور ایک سو کتابوں پر پابندی لگادی۔

طاہر محمود

مزید : ملتان صفحہ آخر