لڑکیوں کوچھیڑنے سے منع کیوں کیا۔۔۔اوباشوں کاٹیچر پروحشیانہ تشدد

لڑکیوں کوچھیڑنے سے منع کیوں کیا۔۔۔اوباشوں کاٹیچر پروحشیانہ تشدد

  



ملتان (وقائع نگار) لڑکیوں کو چھیڑ نے سے منع کرنے پر اوباش نوجوانوں نے نجی کالج کے ٹیچر کو تشدد کا نشانہ بنا ڈالا نوجوانوں نے ٹیچر پر مکوں اور تھپڑوں کی بارش کر دی ٹیچر پر بہیمانہ تشدد کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوگئی ہے بتایا جاتا ہے کہ طلباء کی ایک تقریب میں لڑکے طالبات کو تنگ کر رہے تھے۔جس پر ٹیچر اعجاز نے انہیں چھیڑ خوانی سے منع کیا۔تو اوباش نوجوانوں نے طیش میں آکر ٹی ر اعجاز کو بخاری کالونی کے قریب روک لیا۔اور اسکو تشدد کا نشانہ بنایا۔موقع سے فرار ہوگئے۔اطلاع پاکر مقامی (بقیہ نمبر35صفحہ7پر)

پولیس بھی موقع پر پہنچ گئی۔جہنوں نے قانونی کاروائی شروع کی۔تو اس دوران ٹیچر اور تشدد کرنے والے اوباش نوجوان کے مابین معززین نے صلح کرواکر معاملہ رفع دفع کروا دیا۔ جبکہ جب سوشل میڈیا پر ٹیچر اعجاز پر تشدد کی ویڈیو وائرل ہوئی۔تو سوشل میڈیا صارفین نے تشدد کرنے والے لڑکوں کی گرفتاری کا مطالبہ کیا۔دوسری جانب ایس ایس پی آپریشنز محمد کاشف اسلم کا کہنا ہے کہ ویڈیو دس روز پرانی ہے۔معاملہ صلح صفائی کی وجہ سے ختم ہوگیا ہے

مزید : ملتان صفحہ آخر