قندیل جعفری تشدد کیس،عدالت نے تفتیشی افسر کو ریکارڈ سمیت طلب کر لیا

قندیل جعفری تشدد کیس،عدالت نے تفتیشی افسر کو ریکارڈ سمیت طلب کر لیا

  



کراچی (اسٹاف رپورٹر)سندھ ہائی کورٹ نے قندیل جعفری تشدد کیس میں ناقص تفتیش سے متعلق درخواست پر آئندہ سماعت پر تفتیشی افسر میر محمد لاشاری کو ریکارڈ سمیت طلب کرلیا ہے۔سندھ ہائی کورٹ میں قندیل جعفری تشدد کیس کی سماعت ہوئی۔درخواست گزار کے وکیل لیاقت علی خان ایڈوکیٹ نے موقف اختیارکیا کہ دسمبر 2018 آرٹس کونسل میں انتخابات کے دوران احمد شاہ گروپ کے لوگوں نے قندیل جعفری سے مائیک چھینا اور حملہ کیا۔قندیل جعفری اس وقت گورننگ باڈی کا الیکشن لڑ رہی تھیں۔تفتیشی افسر نے آرٹس کونسل کے صدر احمد شاہ کے دیگر کے خلاف مقدمہ ختم کرنے کی رپورٹ ماتحت عدالت میں جمع کرائی تھی۔ماتحت عدالت نے تفتیشی افسر کی رپورٹ منظور کرلی تھی۔تفتیشی افسر نے اعلی افسران کے دباو میں سی کلاس کی رپورٹ جمع کروائی۔کراچی ضلعی عدالت نے سی کلاس کی رپورٹ منظور کی تھی۔ تفتیشی افسر نے موقع پر موجود  کمشنر کراچی کمشنر جنوبی اور ایس ایس پی ساتھ کا بیان قلم بند نہیں کیا۔تفتیشی افسر نے جائے وقوعہ تک کا معائنہ نہیں کیا۔ماتحت عدالت کے فیصلے کے خلاف قندیل جعفری نے سندھ ہائی کورٹ سے رجوع کیا ہے۔عدالت نے آئندہ سماعت پر آئندہ سماعت پر تفتیشی افسر میر محمد لاشاری کو ریکارڈ سمیت طلب کرلیا 

مزید : صفحہ آخر