سرگودھا میں شادی سے ایک روز قبل دلہن قتل ، ملزم دراصل کون تھا؟ پتہ چل گیا

سرگودھا میں شادی سے ایک روز قبل دلہن قتل ، ملزم دراصل کون تھا؟ پتہ چل گیا
سرگودھا میں شادی سے ایک روز قبل دلہن قتل ، ملزم دراصل کون تھا؟ پتہ چل گیا

  



سرگودھا (مانیٹرنگ ڈیسک)سرگودھا میں شادی سے ایک روز قبل لڑکی کو فائرنگ کرکے قتل کردیا گیا اور اب ملزم کی بھی شناخت ہوگئی  ، اس سے قبل لاہور میں بھی ایک دلہن کو شادی سے تین روز قبل ماردیا گیا تھا۔ 

روزنامہ پاکستان کے مطابق  لڑکی والدین کے ساتھ شاپنگ کے لیے بازار آئی تھی کہ ملزم نے فائرنگ کردی۔پولیس کے مطابق منگوال کی رہائشی 18 سالہ سحرش اہل خانہ کے ساتھ بازار میں شادی کی شاپنگ میں مصروف تھی کہ ملزم مبشر نے ساتھی کے ہمراہ فائرنگ کردی، جس سے سحرش جاں بحق ہوگئی۔پولیس کا کہنا ہے کہ ملزم مبشر، سحرش سے شادی کا خواہش مند تھا، کسی اور جگہ شادی طے ہونے پر اسے فائرنگ کا نشانہ بنایا۔ لڑکی کی لاش پوسٹ مارٹم کے لیے اسپتال منتقل کردی گئی ہے، پولیس کا کہناہے کہ ملزمان کو جلد گرفتار کرلیا جائیگا۔

ادھر انویسٹی گیشن پولیس گلبرگ لاہور نے 2 روز قبل گلبرگ کے علاقہ میں 24سالہ حرا نامی لڑکی کو قتل کرنے والے ملزم مقتولہ کے سگے بہنوئی احسن کو ایمن آباد گوجرانوالہ سے گرفتار کر لیا۔

ڈی آئی جی انویسٹی گیشن ڈاکٹر انعام وحید خان کی زیر نگرانی ایس پی انویسٹی گیشن ماڈل ٹاو¿ن اسد مظفر کی سربراہی میں پولیس ٹیم نے جدید ٹیکنالوجی کی مدد سے مقتولہ حرا کو قتل کرنے والے حرا کے سگے بہنوئی احسن کو ایمن آباد گوجرانوالہ سے گرفتار کر لیا۔

دوران تفتیش ملزم احسن نے انکشاف کیا کہ وہ مقتولہ حرا کو پسند کرتا تھا اور مقتولہ کی رواں ہفتے شادی تھی جس کا ملزم کو رنج تھا۔ ملزم احسن نے وقوعہ کی شام حرا کوفون کرکے گھر کے پاس قریبی پارک میں بلایا۔ملزم احسن اور حرا کے درمیان تلخ کلامی ہوئی اورملزم نے پہلے سے تیار منصوبے کے تحت مقتولہ کو سیدھے فائرمارکر قتل کر دیا۔ملزم احسن نے مقتولہ حرا کو 4 فائر مارے جس سے مقتولہ زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے موقع پر ہی جاں بحق ہوگئی تھی۔ملزم احسن مقتولہ حرا کو قتل کرنے کے بعد واپس ایمن آباد فرار ہو گیا تھا۔ڈی آئی جی انویسٹی گیشن ڈاکٹر انعام وحید خان نے قاتل کی گرفتاری پر پولیس ٹیم کے لئے نقد انعامات اور تعریفی اسناد دینے کا اعلان کیا ہے۔

مزید : جرم و انصاف