آج کل کی لڑکیوں کو کس طرح کے خواب آتے ہیں اور 50سال پہلے ان کی دادیوں کو کیسے خواب آتے تھے؟ سائنسدانوں نے لڑکیوں کا شرمناک راز بے نقاب کر دیا

آج کل کی لڑکیوں کو کس طرح کے خواب آتے ہیں اور 50سال پہلے ان کی دادیوں کو کیسے ...
آج کل کی لڑکیوں کو کس طرح کے خواب آتے ہیں اور 50سال پہلے ان کی دادیوں کو کیسے خواب آتے تھے؟ سائنسدانوں نے لڑکیوں کا شرمناک راز بے نقاب کر دیا

  



برلن(مانیٹرنگ ڈیسک) آج کل کی لڑکیوں کو کیسے خواب آتے ہیں اور 50سال قبل ان کی دادیوں کو کیسے خواب آتے تھے؟ سائنسدانوں نے جدید تحقیق میں آج کل کی لڑکیوں کا سب سے شرمناک راز بے نقاب کر دیا ہے۔

میل آن لائن کے مطابق جرمنی کی یونیورسٹی آف فریبرگ کے سائنسدانوں نے تحقیقاتی نتائج کے بعد بتایا ہے کہ آج کل کی لڑکیوں کو 50سال قبل کی خواتین کی نسبت 3گنا زیادہ گندے ،جنسیت پر مبنی خواب آتے ہیں۔اس تحقیق میں سائنسدانوں نے 16سے 92سال کے 2ہزار 907مردوخواتین سے سوالات کیے اور ان کے خوابوں کی نوعیت کے بارے میں دریافت کیا۔

اس تحقیقاتی سروے میں نوجوان لڑکیوں نے اعتراف کیا کہ انہیں ہر پانچ میں سے ایک ایسا خواب آتا ہے جس میں وہ جنسی عمل یا ایسی ہی کوئی پرشہوت چیز دیکھتی ہیں۔ اس کے برعکس عمر رسیدہ خواتین نے بتایا کہ ان کو نوجوانی میں ہر 15میں سے ایک خواب ایسا آتا تھا جس میں وہ جنسی عمل دیکھتی تھیں۔

تحقیقاتی ٹیم کے سربراہ جو ہیمنگ کا کہنا تھا کہ ”ہماری تحقیق میں معلوم ہوا ہے کہ 16سے 30سال عمر کی خواتین سب سے زیادہ گندے خواب دیکھتی ہیں۔ماضی میں مرد ایسے خواب زیادہ دیکھتے تھے اور خواتین کم، لیکن آج کل کی لڑکیوں کو لڑکوں کے برابر ایسے گندے خواب آتے ہیں۔ حالیہ چند دہائیوں میں مردوں میں ایسے خواب دیکھنے کی شرح لگ بھگ وہی ہے تاہم لڑکیوں میں یہ شرح تیزی سے بڑھی ہے۔“

مزید : ڈیلی بائیٹس