رمضان شوگر ملز کیس، فریقین کے وکلاء مزید دلائل کیلئے طلب 

 رمضان شوگر ملز کیس، فریقین کے وکلاء مزید دلائل کیلئے طلب 

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائی کورٹ کے مسٹرجسٹس انوارالحق پنوں نے شہباز شریف فیملی کی رمضان شوگر ملز کو این او سی جاری نہ کرنے کے خلاف دائردرخواست پرفریقین کے وکلاء کو مزید دلائل کے لئے طلب کرلیا ہے،ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے ایکسائز کاجواب عدالت میں داخل کرادیاہے،جس میں کہا گیاہے کہ درخواست گزاروں کی درخواست ابھی ابتدائی مرحلے پر ہے،این اوسی کے اجراء کے قانونی مرحلے باقی ہیں،درخواست گزاروں نے ابتدائی مرحلے پر درخواست جمع کراتے ہی عدالت سے رجوع کرلیا،سکیورٹی کلیرنس کے بغیر این او سی کا اجراء نہیں کیاجاسکتا،شوگر ملز کا ایک بورڈ آف ڈائریکٹر سلمان شہباز عدالتی اشتہاری بھی ہے،رمضان شوگر ملزکے وکیل شعیب راشد نے موقف اختیارکیا کہ نیب ریفرنسز کو جواز بناکراین او سی کااجراء روکا گیا،کرشنگ سیزن شروع ہونے والاہے مگر محکمہ ایکسائز کی جانب سے این اوسی جاری نہیں کیاجارہا،این او سی جاری نہ ہونے سے کسانوں اور مل ملازمین کونقصان کا سامنا کرناپڑے گا،اب تک رمضان شوگر ملز کوبارہ این او سی جاری ہوچکے،ڈی سی سے ملز چلانے کی اجازت نامہ بھی مل چکا،محکمہ ایکسائز این اوسی کااجرا ء نہیں کررہا،این اوسی جاری نہ ہونے سے شوگر مل فعال نہیں ہورہی،عدالت سے استدعاہے کہ این اوسی کے اجرا ء تک حکم امتناعی جاری کرتے ہوئے ملز چلانے کی اجازت دی جائے۔

 رمضان شوگر ملز

مزید :

صفحہ آخر -