سنی اتحاد کونسل کا  26 نومبر کو اسلام آباد دھرنے میں شرکت کا فیصلہ

سنی اتحاد کونسل کا  26 نومبر کو اسلام آباد دھرنے میں شرکت کا فیصلہ

  

لاہور(نمائندہ خصوصی)سنی اتحاد کونسل پنجاب کا اہم اجلاس متحدہ علماء بورڈ پنجاب اور سنی اتحاد کونسل پاکستان کے چیئرمین صاحبزادہ حامد رضا کی صدارت میں صوبائی سیکریٹریٹ لاہور میں منعقد ہوا۔اجلاس میں لاہور ڈویژن،گوجرانوالہ ڈوثرن، گجرات ڈوثرن اور راولپنڈی ڈوثرن کے اہم ذمہ داران سمیت پنجاب بھر کے اضلاع اور ڈویژنوں کے ذمہ داران نے شرکت کی۔اجلاس میں موجودہ ملکی صورتحال کا جائزہ لے کر اہم فیصلے کیے گئے ہیں۔اجلاس میں تحریک انصاف کے 26 نومبر کو ہونے والے دھرنے میں سنی اتحاد کونسل کے کارکنان کی بھرپور شرکت کو یقینی بنانے کیلئے بھی لائحہ عمل تشکیل دیا گیا اور دھرنے کی تیاریوں کے سلسلہ میں کمیٹیاں بھی قائم کر دی گئیں۔اجلاس میں سیّد جواد الحسن کاظمی،ارشد مصطفائی۔الحاج سرفراز احمد تارڑ،صاحبزادہ حسن رضا، صاحبزادہ حسین رضا،پیر طارق ولی چشتی، ملک بخش الہی، صاحبزادہ معاذ المصطفیٰ قادری،میاں فہیم اختر،مولانا اکبر نقشبندی، محمد خالد نور,راو حسیب قادری, مولانا وزیرالقادری، محمد اکرم رضوی اور دیگر نے شرکت کی۔

اجلاس کے اعلامیے میں اس عزم کا اظہار کیا گیا کہ سنی اتحاد کونسل کے ہزاروں کارکن 26 نومبر کو اسلام آباد دھرنے میں پہنچیں گے۔سنی اتحاد کونسل بطور اتحادی جماعت تحریک انصاف کے ساتھ بھرپور تعاون اور حمایت جاری رکھے گی اور کسی حکومتی سازش کو کامیاب نہیں ہونے دیا جائے۔آرمی چیف کی تقرری کو متنازعہ بنانے کی حکومتی کوششیں شرمناک فعل ہے۔ متحدہ علماء بورڈ پنجاب اور سنی اتحاد کونسل پاکستان کے چیئرمین صاحبزادہ حامد رضا نے کہا کہ ملک غیریقینی حالات سے دوچار ہے، عالمی قوتیں پاکستان کو غیرمستحکم کرنے کی سازشوں میں مصروف ہیں،حکومت شکوک و شبہات کو دور کرنے کے لیے عام انتخابات کی تاریخ کا اعلان کرے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -