صدر کی طرف سے اہم تعیناتیوں کی سمری روکنے کی صورت میں حکومت کا متبادل پلا ن تیار

صدر کی طرف سے اہم تعیناتیوں کی سمری روکنے کی صورت میں حکومت کا متبادل پلا ن ...

  

     اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) حکومت نے پی ٹی آئی چیئرمین کے بیان کے بعد اہم تعیناتیوں کیلئے متبادل آپریشنز پر غور شروع کردیا۔صدر کی طرف سے وزیراعظم کی ایڈوائس روکنے کی صورت میں حکومت کا پلان بی سامنے آ گیا، جس کے مطابق حکومت سیکرٹری کابینہ سے رولز آف بزنس میں ترمیم کا نوٹیفکیشن جاری کروائے گی اور چیئرمین جوائنٹ چیفس آف سٹاف، آرمی چیف کی تقرری کی سفارش کو فہرست سے نکال دیگی۔ذرائع سیکریٹری کابینہ کے نوٹیفکیشن کے بعد وزیراعظم آفس صدر کو بھیجی گئی سمری واپس لے لے گا، ایوان صدر کو بھیجی گئی سمری وا پس لے کر وزیراعظم خود تقرریوں کی منظوری دیدیں گے،حکومت کابینہ اجلاس میں رولز آف بزنس 1973 کے رول 15- اے میں ترمیم کی منظوری لے سکتی ہے۔دریں اثناء ایکسپریس نیوز کے پروگرام کل تک میں میزبان جاوید چوہدری سے گفتگو میں وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے کہا پاک فوج کے دو اہم عہدوں پر تقرریاں 28 نومبر تک ہو جا ئیں گی، اگر صدر مملکت نے تقرری کے معاملے پر رکاوٹ ڈالی تو ہمارے پاس پلان بی بھی موجود ہے۔وفاقی وزیر خزانہ سینیٹر اسحاق ڈار نے کہا چیئرمین جوائنٹ چیف آف سٹاف کا تقرر 27 سے پہلے ہوجائے گا جبکہ دونوں تقرریاں دو مختلف دن بھی ہو سکتی ہیں امید ہے کہ 28 نومبر تک سارا پراسس مکمل ہو جائیگا۔ لیفٹیننٹ جنرل عاصم منیر کی 27 نومبر کو ریٹا ئرمنٹ کے سوال کا جواب دیتے ہوئے اسحاق ڈار نے کہا اس کا حل بھی ہمارے پاس موجود ہے۔ملک کی معاشی صورتحال پر گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا ملک کے ڈیفالٹ کا کوئی خطرہ نہیں جبکہ تمام ادائیگیاں بھی وقت پر ہوجائیں گی۔ تحریک انصاف کیساتھ مذاکرات کے حوالے سے ان کا کہنا تھا ہم مذاکرات کیلئے بالکل تیار ہیں لیکن یہ مذاکرات غیرو مشروط ہونے چاہئیں۔

حکومت متبادل پلان

مزید :

صفحہ اول -