ریگی کے عوام کا بجلی کی بندش کے خلاف احتجاج 

ریگی کے عوام کا بجلی کی بندش کے خلاف احتجاج 

  

پشاور(سٹی رپورٹر) پشاور کے نواحی علاقی ریگی کے شہریوں نے بجلی کی مکمل بندش کیخلاف ناصر باغ روڈ پر احتجاج کیا اور روڈ پر رکاوٹیں کھڑی کر کے ٹائر جلائے مظاہرین نے دھمکی دی کہ اگر بجلی کی سپلائی شروع نہیں کی تو مین روڈ کیساتھ ساتھ گرڈ اسٹیشن کے گھیراؤ سے گریز نہیں کیا جائے گا اور آنیوالے انتخابات میں ووٹ پول کرنے سے بائیکاٹ کیا جائے گا۔مظاہرین کا کہنا ہے کہ پیسکو نے ان کے گاؤں کی بجلی مکمل بند کردی ہے جس کے باعث لوگوں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے بجلی کی بندش سے مساجد میں پانی ناپید ہے جبکہ شدید سردی میں بچے نمونیا کی مرض میں مبتلا ہو گئے ہیں علاقہ کے لوگوں نے حکومت سے بجلی کی بندش کا نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے بصورت دیگر اس کے خلاف یونیورسٹی روڈ پر احتجاج کا اعلان کیا ہے تفصیلات کے مطابق پشاور کے علاقہ ریگی کے مکینوں نے بجلی کی مکمل بندش کے خلاف ناصر باغ روڈ پر احتجاج کیا اور سڑک پر روکاوٹیں کھڑی کرکے ہر قسم کے ٹریفک کیلئے بند کردیا اس موقع پر مظاہرین نے حکومت اور پیسکو کے خلاف شدید نعرے بازی بھی کی مظاہرین کا کہنا تھا کہ پہلے ان کے علاقہ میں 16 گھنٹے کی لوڈشیڈنگ تھی مگر اب ان کے علاقہ کی بجلی مکمل طور پر بند کردی ہے گزشتہ 15 دن سے بجلی مکمل بند کی گئی ہے جس کے باعث لوگوں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے بجلی کی بندش سے جہاں گھریلو خواتین کو مشکلات کا سامنا ہے وہی طلبا کی پڑھائی بھی متاثر ہو رہی ہے مظاہرین کا کہنا تھا کہ اس سلسلے میں متعلقہ حکام سے متعدد بار رابطہ کیا گیا مگر کوئی شنوائی نہیں ہورہی انہوں نے کہا کہ شدید سردی میں متعدد بچے بیمار ہو گئے ہیں علاقہ میں گیس پہلے سے ہی بند تھی مگر اب بجلی کی بند کردی ہے اگر حکومت نے بجلی بحال نہ تو اس اس کے خلاف بھر پور احتجاج کیا جائے گا جبکہ گریڈ اسٹیشن پر حملے سے بھی گریز نہیں کیا جائے گا مظاہرین کا کہنا تھا کہ اس بار انہوں نے ناصر باغ روڈ بلاک کیا ہے اگر بجلی بحال نہ کی گئی تو مین جی ٹی روڈ کی بندش کے ساتھ ساتھ گریڈ اسٹیشن پر حملے سے بھی گریز نہیں کی جائے گی انہوں نے حکومت سے نوٹس لینے کا مطالبہ کیا۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -