غیر قانونی طور پر سرحدیں عبور کرنے سے مشہور برطانوی طالب علم اپنی گرل فرینڈ کو ملنے پہنچا تو ایسا کام ہوگیا کہ کوئی سوچ بھی نہ سکے

غیر قانونی طور پر سرحدیں عبور کرنے سے مشہور برطانوی طالب علم اپنی گرل فرینڈ ...
غیر قانونی طور پر سرحدیں عبور کرنے سے مشہور برطانوی طالب علم اپنی گرل فرینڈ کو ملنے پہنچا تو ایسا کام ہوگیا کہ کوئی سوچ بھی نہ سکے
سورس: Twitter/@Real_Lord_Miles

  

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) کیا آپ کو وہ برطانوی طالب علم یاد ہے جس نے روس کے یوکرین پر حملے کے بعد یوکرین کا سفر کیا؟ جی ہاں، ہم اسی مائیلز رولیج نامی نوجوان کی بات کر رہے ہیں جو افغانستان سے امریکی فوج کے انخلاءاور طالبان کی حکومت بننے کے بعد افغانستان میں بھی پھنس گئے اور انہیں وہاں سے ریسکیو کرنا پڑا۔ 

مائیلز رولیج غیرقانونی طور پر ممالک کی سرحدیں عبور کرنے اور خود کو خطرے میں ڈالنے کے حوالے سے شہرت رکھتے ہیں ۔ اب کی بار وہ اپنی گرل فرینڈ کو ملنے کئی ممالک کے بارڈر غیرقانونی طور پر عبور کرکے پہنچنے مگر وہاں گرل فرینڈ نے ان کے ساتھ ایسا کام کر ڈالا کہ کوئی سوچ بھی نہ سکتا تھا۔

مائیلز رولیج نے اپنے ٹوئٹر اکاﺅنٹ @real_lord_milesپر بتایا ہے کہ وہ اپنی گرل فرینڈ کو ملنے 10کا طویل سفر کرکے اس کے ملک پہنچے، اس دوران انہوں نے کئی ممالک کی سرحدیں غیرقانونی طور پر عبور کیں، مگر لڑکی نے اپنے ملک پہنچنے پر مائیلز رولیج کے ساتھ ملاقات بھی نہیں کی اور فون پر ہی ان کے ساتھ تعلق ختم کر لیا۔

ڈینجر ٹورسٹ کے نام سے شہرت رکھنے والا مائیلز رولیج بتاتا ہے کہ”میں سفر کی صعوبتیں برداشت کرکے اپنی گرل فرینڈ کے ملک پہنچا تھا، پہاڑی راستوں پر پیدل سفر کرتے ہوئے میں اپنا ٹخنہ بھی فریکچر کروا بیٹھا مگر اس نے میرے ساتھ ایک ملاقات بھی نہیں کی اور فون پر ہی مجھے کہہ دیا کہ اب وہ میرے ساتھ مزید تعلق نہیں رکھنا چاہتی۔“

مزید :

ڈیلی بائیٹس -