قیامت کی نشانی؟ بہن بھائی کا شادی کا فیصلہ

قیامت کی نشانی؟ بہن بھائی کا شادی کا فیصلہ
قیامت کی نشانی؟ بہن بھائی کا شادی کا فیصلہ

  

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) قرب قیامت کی نشانی ہے کہ برطانیہ میں ایک نوجوان بہن بھائی ایک دوسرے کی محبت میں گرفتار ہوگئے اور اب باہم شادی کرنے کے بھی خواہش مند ہیں۔ دی سن کے مطابق انٹرنیٹ پر لوگوں سے مشورہ لینے کے لیے اس نوجوان نے ایک پوسٹ کی ہے جس میں وہ بتاتا ہے کہ میں 29سال کا ہوں اور میری سوتیلی بہن 28سال کی ہے۔ ہمارا باپ ایک ہے جبکہ مائیں الگ ہیں۔

نوجوان لکھتا ہے کہ ہم بچپن سے ہی الگ رہ رہے ہیں۔ میری پرورش میرے باپ کے پاس ہوئی جبکہ وہ اپنی ماں کے ساتھ رہتی تھی۔ پہلی بار ہم اس وقت ملے جب میں 15سال کا اور وہ 14سال کی تھی۔ گھر کے بڑے نیچے بیٹھ کر باتیں کر رہے تھے اور ہم دونوں اکیلے اوپر تھے۔ ہم دونوں نے ایک دوسرے میں ایسی کشش محسوس کی کہ ایک دوسرے سے محبت کرنے لگے۔

نوجوان بتاتا ہے کہ اس کے بعد ایک بار پھر ہم دونوں الگ ہو گئے، وہ اپنی ماں کے ساتھ ملک کے دوسرے حصے میں رہتی تھی چنانچہ ہم مل نہیں سکتے تھے تاہم فون پر ہم رابطے میں رہے۔ اب اتنے سالوں بعد ہم ایک بار پھر اکٹھے ہوئے ہیں اور ایک دوسرے کے لیے پہلے سے بھی زیادہ محبت محسوس کر رہے ہیں ۔ ہماری شادی کیوں نہیں ہو سکتی؟ اس سے کسی کو کیا نقصان پہنچ سکتا ہے؟

اس نوجوان کو صارفین کی طرف سے بتایا گیا ہے کہ محرم رشتوں میں جنسی تعلق برطانیہ میں ممنوع ہے اور اگر لوگوں کو پتہ چل گیا اور انہوں نے پولیس کو رپورٹ کر دی تو تم دونوں کو قید کی سزا ہو سکتی ہے۔ تمہیں چاہیے کہ کونسلنگ کے لیے کسی ماہر کے پاس جاﺅ۔ وہ ان غلط جذبات پر قابو پانے میں تمہاری مدد کر سکتا ہے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -