چیف جسٹس پی آئی اے کے ”روتے کرلاتے“ مسافروں کی حالت پر نوٹس لیں: متاثرین کا مطالبہ

چیف جسٹس پی آئی اے کے ”روتے کرلاتے“ مسافروں کی حالت پر نوٹس لیں: متاثرین کا ...
چیف جسٹس پی آئی اے کے ”روتے کرلاتے“ مسافروں کی حالت پر نوٹس لیں: متاثرین کا مطالبہ

  

لندن (بیورورپورٹ) چیف جسٹس سپریم کورٹ افتخار محمد چودھری کی واضح ہدایت کے باوجود پی آئی اے کا وطیرہ نہ بدل سکا۔ گزشتہ روز تاخیر کا شکار ہونے والی پرواز پی 709 کے مسافر سینئر صحافی مرزا نعیم الرحمان کے مطابق اس پرواز نے لاہور سے 10.45پر اڑنا تھا لیکن شام پانچ بجے تک بھی روانہ نہ ہو سکی جبکہ ائیر پورٹ پر موجود مسافروں نے بار بار فلائٹ میں تاخیر اناﺅنس کرنے پر زبردست ہنگامہ اور ائیر پورٹ حکام کیخلاف نعرے بازی بھی کارگر ثابت نہ ہو سکی۔ ائیر پورٹ کے ڈیپارچر لاﺅن میں کمسن بچے زارو قطار روتے رہے جبکہ سینکڑوں مسافروں نے شکایت کی کہ ان کی مانچسٹر سے آگے کی فلائٹس کی ٹکٹیں منسوخ کر دی گئی ہیں جس سے انہیں سینکڑﺅں پاﺅنڈ نقصان کا سامنا کرنا پڑا ہے۔ متعدد مسافروں نے یہ شکایت بھی کی کہ انہوں نے مانچسٹر سے آگے ٹرین پر جانا تھا مگر تاخیر کے باعث ٹکٹ کینسل تصور ہوتی ہے لہٰذا پی آئی ا ے انہیں ہرجانہ ادا کرے۔ بار بار فلائٹ کی منسوخی سے بیمار مریضوں ‘ اور بورڑھے افراد کو اذیت کا سامنا کرنا پڑا درجنوں مسافر‘ بورڈنگ پاس کینسل کرا کے باہر چلے گئے۔ مانچسٹر جانے والے مسافروں نے چیف جسٹس آف پاکستان سے درخواست کی ہے کہ جس طرح انہوں نے دیگر محکمہ جات میں ہونیوالی بے ضابطگیوں کا نوٹس لیا ہے اسی طرح وہ پی آئی اے کی فلائٹس کی تاخیر اور بے ضابطگیوں کے باعث مسافروں کو پہنچنے والے نقصانات کا بھی نوٹس لیں۔ دریں اثناءبرطانوی حکومت نے بھی پی آئی اے کی طرف سے آئے روز تاخیر سے آنیوالی فلائٹوں پر تشویش کا اظہار کیا ہے اور کہا ہے کہ پی آئی اے کی فلائٹس ہمیشہ لیٹ آتی ہیں جس کی وجہ سے برطانوی ائیر پورٹس پر مسافروں کو انتظار اور تکلیف کا سامناکرنا پڑتا ہے اور اگر یہ سلسلہ قائم رہا تو پی آئی اے کی یور پی فلائٹوں پر پابندئی عائد کر دی جائے گی۔

مزید : بزنس