شادی کی تقریب میں نوجوان دلہن کی آنکھوں کے سامنے دولہا کا گلا کاٹ دیا گیاکیونکہ۔۔۔

شادی کی تقریب میں نوجوان دلہن کی آنکھوں کے سامنے دولہا کا گلا کاٹ دیا ...
شادی کی تقریب میں نوجوان دلہن کی آنکھوں کے سامنے دولہا کا گلا کاٹ دیا گیاکیونکہ۔۔۔

  

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) غیرت کے نام پر قتل کی سفاکانہ روایت برصغیر پاک و ہندکے رگ و پے میں سرایت کیے ہوئے ہے جس سے نجات آسانی سے ممکن نہیں۔ آئے روز دونوں ممالک سے لڑکیوں اور ان کے آشناﺅں کے قتل ہونے کی خبریں آتی رہتی ہیں۔ گزشتہ دنوں بھارت میں ایک لڑکی کے لواحقین نے اس کے آشنا کو ایسی دردناک موت دے دی کہ سن کر روح کانپ جائے۔ میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق 22سالہ مقتول مہانکلی انیل اور 18سالہ لڑکی ہستاپورم مونیکا ایک دوسرے سے محبت کرتے تھے تاہم مونیکا کے گھر والے اس رشتے پر ناخوش تھے۔ چنانچہ دونوں نے گھر سے بھاگ کر شادی کرنے کا فیصلہ کر لیا۔

رپورٹ کے مطابق مونیکا اور انیل بھاگ کر بھارتی ریاست تلنگانہ کے قصبے تھیماپور کے ایک مندر میں چلے گئے جہاں انہوں نے شادی کرنی تھی۔ لڑکی کے والدین بھی انہیں تلاش کرتے ہوئے وہاں پہنچ گئے اور انہوں نے انیل انیل کو پکڑ لیا۔ اسے گھسیٹ کر مندر سے باہر لائے اور اس کا گلہ کاٹنے کے بعد اس کا سر پتھروں سے کچل ڈالا۔ میل آن لائن کے مطابق انیل اور مونیکا نے اس سے قبل بھی گھر سے بھاگنے کی کوشش کی تھی تاہم پولیس کی مدد سے مونیکا کے گھروالوں نے وہ کوشش ناکام بنا دی اور اسے پڑھائی کے لیے دور بھیج دیا۔ گزشتہ دنوں وہ پڑھائی مکمل کرکے واپس آئی تو دونوں کی ملاقاتیں پھر شروع ہو گئی اور انہوں نے پھر بھاگنے کا فیصلہ کر لیا۔ مقامی پولیس کمشنر وی بی کملاسن ریڈی کے مطابق10 ملزمان کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -