نیلم جہلم ہائیڈروپاور پراجیکٹ ،ڈیم سے پاور ہاؤس تک بائیں سرنگ کی کھدائی مکمل

نیلم جہلم ہائیڈروپاور پراجیکٹ ،ڈیم سے پاور ہاؤس تک بائیں سرنگ کی کھدائی مکمل

  

 لاہور(پ ر) قومی اہمیت کے حامل 969 میگاواٹ پیداواری صلاحیت کے نیلم جہلم ہائیڈرو پاور پراجیکٹ کی تکمیل کی جانب ایک اہم پیش رفت کے طور پر واپڈا نے اس منصوبے کی بائیں سرنگ (Left Tunnel) کی کھدائی مکمل کر لی ہے۔نیلم جہلم ہائیڈرو پاور پراجیکٹ کی انتظامیہ نے یہ سنگِ میل اُس وقت عبور کیا جب ٹنل بورنگ مشین نے کھدائی کا عمل مکمل کرتے ہوئے آج بائیں سرنگ کے دونوں حصوں کو نہایت درستگی کے ساتھ آپس میں مِلا دیا۔ مذکورہ سرنگ کی بیک وقت زیریں اوربالائی دونوں جانب سے کھدائی کی گئی ۔ بالائی جانب یعنی ڈیم سائٹ سے یہ کام ڈرِل اینڈ بلاسٹ کے روایتی طریقے جبکہ زیریں جانب سے یہی کام ٹنل بورنگ مشین کی مدد سے کیا گیا۔ آج کی اس کامیابی کے بعد نیلم جہلم ہائیڈرو پاور پراجیکٹ کی ڈیم سے پاور ہاؤس تک بائیں سرنگ کی کھدائی مکمل ہوگئی ہے، جبکہ منصوبے کی دائیں سرنگ کی کھدائی اپریل 2017 ء میں مکمل ہوگی۔ جس کے بعد دریائے نیلم کے پانی کو ڈیم سے پاور ہاؤس تک منتقل کرنے کا زیرِزمین نظام حتمی مرحلے میں داخل ہوجائے گا۔اس زیرِزمین نظام کی تکمیل پر پیداواری یونٹوں کی ویٹ ٹیسٹنگ (Wet Testing) کی جائے گی جبکہ منصوبے سے بجلی کی پیداوار 2018 ء کے اوائل میں متوقع ہے۔نیلم جہلم ہائیڈرو پاور پراجیکٹ کی بائیں سرنگ کی کھدائی مکمل ہونے کا اہم سنگِ میل حاصل کرنے پر ڈیم سے6 کلومیٹر سرنگ کے اندر ایک تقریب کا اہتمام کیا گیا۔ چیئرمین واپڈا لیفٹیننٹ جنرل مزمل حسین (ریٹائرڈ) نے بائیں سرنگ کے دونوں حصوں کو ملانے کی رسم ادا کی۔ تقریب میں نیلم جہلم ہائیڈرو پاور پراجیکٹ کے چیف ایگزیکٹو آفیسر اور پراجیکٹ ڈائریکٹر کے علاوہ کنسلٹنٹس اور کنٹریکٹر زکے نمائندوں نے شرکت کی۔اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے چیئرمین واپڈانے پراجیکٹ انتظامیہ، کنسلٹنٹس اور کنٹریکٹر ز کو اس اہم کام کی تکمیل پر مبارکباد پیش کی۔ انہوں نے کہا کہ ملک سے بجلی کی قلت دور کرنے اور قومی نظام میں ماحول دوست بجلی شامل کرنے کیلئے نیلم جہلم ہائیڈرو پاور پراجیکٹ ایک اہم منصوبہ ہے۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ واپڈا کی مو جودہ انتظامیہ کی لگن اور بھرپور کوشش کی بدولت اس منصوبے کو کم سے کم مدت میں مکمل کر لیا جائے گا۔چیئرمین واپڈا لیفٹیننٹ جنرل مزمل حسین(ریٹائرڈ) نے منصوبے کی تعمیر کیلئے وفاقی حکومت کی بھرپور مدد کا شکریہ ادا کیا۔ انہوں نے بتایا کہ منصوبے کے باقی کاموں کی تکمیل کے اہداف حاصل کرنے کیلئے ٹائم لائنز کا تعین کیا گیا ہے جبکہ منصوبے پر تعمیراتی کام کی پیش رفت کو مانیٹر کرنے کیلئے ایک مؤثر طریقہ کار بھی وضع کیا گیا ہے۔

یہ بات قابلِ ذکر ہے کہ نیلم جہلم ہائیڈرو پاور پراجیکٹ سے پیدا ہونے والی بجلی نیشنل گرڈ میں شامل کرنے کیلئے نیشنل ٹرانسمیشن اینڈ ڈسپیچ کمپنی(این ٹی ڈی سی) 525کلووولٹ صلاحیت کی ترسیلی لائن تعمیر کر رہی ہے۔ 145 کلومیٹر طویل ڈبل سرکٹ لائن ضلع جہلم میں ڈومیلی کے مقام پر نیشنل گرڈ کے ساتھ منسلک ہوگی۔ یہ ترسیلی لائن نیلم جہلم ہائیڈرو پاور پراجیکٹ کے آپریشنل ہونے سے قبل مکمل ہوجائے گی۔

مزید :

کامرس -