حکومت کا ساتھ دیں گے نہ عمران خان کا ،آئینی نظام کیساتھ ہیں :پیپلز پارٹی

حکومت کا ساتھ دیں گے نہ عمران خان کا ،آئینی نظام کیساتھ ہیں :پیپلز پارٹی

  

لاہور (آئی این پی) پیپلزپارٹی کے چےئر مین بلاول بھٹو اور شر یک چےئر مین آصف علی زرداری نے تحر یک انصاف کے2نومبر کے احتجاج سے ملک میں پیداہونیوالی سیاسی صورتحال پر پارٹی پالیسی دیتے ہوئے کہا ہے کہ پیپلزپارٹی پانامہ لیکس کے معاملے پر نوازشریف سے کوئی رعایت کر یگی اور نہ احتساب یا استعفیٰ کے علاوہ کوئی راستہ دیا جائے گا‘پارٹی قائدین نوازشریف کی حکومت کا ساتھ دینے کے تاثر کو مکمل طور پر زائل کر یں اور پیپلزپارٹی کے4نکات کو اجاگر کیا جائے ۔ پیپلزپارٹی کے ذمہ دار ذرائع کے مطابق پیپلزپارٹی نے نواز شریف اور عمران خان کی بجائے صرف ملک میں جمہو ریت اور آئین کا ساتھ دینے کا فیصلہ کرتے ہوئے باقاعدہ پالیسی بھی تشکیل دیدی ہے جسکے مطابق پیپلزپارٹی تحریک انصاف اور حکومت محاذ آرائی میں آئینی نظام کا سا تھ دیں گی (ن) لیگ کی حکومت یا عمران خان کا ساتھ نہیں دیا جائیگا عمران خان کی تحریک کے نتیجے میں نظام لپیٹنے کے کسی اقدام کی بھر پور مخالفت اور مزاحمت کی جائیگی پیپلزپارٹی کے چےئر مین بلاول بھٹو اور شر یک چےئر مین آصف علی زرداری نے پارٹی قائدین پر واضح کر دیا ہے پیپلزپارٹی کی پالیسی ہے کہ نواز شریف سے کوئی رعایت ہوگی نہ احتساب یا استعفیٰ کے علاوہ کوئی راستہ دیا جائے گا‘ پی پی پالیسی پی ٹی آئی کی مہم جوئی کی صورت میں جمہوریت کو خطرہ ہوا تو نظام کا دفاع کریں گے‘ پی پی پالیسی واضح اور دوٹوک ہے پارٹی رہنما کسی الجھن کا شکار نہ ہوں‘آصف علی زرداری اوربلاول بھٹو نے پارٹی قائدین کو ہدایت دی ہے کہ حکومت کے ساتھ ہونے کے تاثر کو زائل اور بلاول بھٹو کے چار نکات کو اجاگر کریں۔

مزید :

صفحہ اول -