خیبر یجنسی ،تیراہ باغ میدان میں ہزاروں بچے حفاظتی ٹیکوں سے محروم

خیبر یجنسی ،تیراہ باغ میدان میں ہزاروں بچے حفاظتی ٹیکوں سے محروم

  

خیبر ایجنسی (بیورو رپورٹ)تیراہ باغ میدان میں ہزاروں بچے حفاطتی ٹیکوں سے محروم ،گزشتہ دوسالوں سے بچوں کو حفاطتی ٹیکے نہیں لگووادئیے گئے ہیں ،ای پی آئی سنٹر نہ ہونے کی وجہ سے تین ورکرز تنخواہیں گھر پر وصول کرتے ہیں ،کئی بار محکمہ صحت کو درخواستیں دی لیکن کوئی شنوائی نہیں ہو ئی ،تیراہ باغ عمائدین خیبر ایجنسی کے دور افتادہ علاقہ تیراہ باغ میدان میں گز شتہ تقریبا دو سالوں سے ہزاروں بچوں کو حفاظتی ٹیکے نہیں لگو ادئیے ہیں جسکی وجہ سے بچے خنا ق ،تپ دق،خسرہ ،تشنج،ہیپاٹائٹس ،ٹی بی ،نمونیاجیسے مرض میں مبتلا ہو گئے ہیں باغ تیراہ کے عمائدین آدم خان ،اٖصراف محمد اسلام نے میڈیا کو بتا یا کہ ٹی ڈی پیز واپسی کے بعد بچوں کو حفاظتی ٹیکے نہیں لگا دئیے ہیں ای پی آئی کے تین ورکرز ہیں لیکن وہاں ای پی آئی سنٹر نہ ہونے کی وجہ سے گھروں پر تنخواہیں وصول کرتے ہیں انہوں نے کہا کہ ہزاروں بچے حفاظتی ٹیکوں سے محروم ہیں اور گرمی کے موسم لوگ واپس تیراہ آتے ہیں جسکے بعد بچوں کی تعداد میں مزید اضافہ ہو جاتا ہیں انہوں نے کہا کہ محکمہ صحت کو باربا ر یاد دہانی کرائی لیکن انہوں نے کسی قسم کے اقدامات نہیں اٹھائیں انہوں نے کہا کہ تیراہ باغ میدان کی لاکھوں آبادی کیلئے کوئی ہسپتال نہیں ہیں صحت سہولیات کی عدم موجودگی سے لوگ سخت مشکلات سے دوچار ہیں بچوں سمیت خواتین مریضوں کیلئے کسی قسم کی سہولت نہیں ہیں ڈیلیوری یا گھر پر ہو جاتی ہیں جبکہ زیادہ تکلیف کی صورت میں پھر کوہاٹ یا پشاور کے ہسپتالوں میں لے جاتے ہیں جہاں پر پانچ یا چھ گھنٹے لگ جاتے ہیں اس سلسلے میں ایجنسی سر جن ڈاکٹر نیاز آفریدی نے بتایا کہ تیراہ باغ میدان میں ای پی آئی پوسٹیں خالی ہیں اور ان پر تعیناتی ڈایکٹر ہیلتھ فاٹاکا اختیار ہے اگر انہیں اختیار دیدیاگیا تو خالی پوسٹوں پر لوکل لوگوں کو تعینات کرکے کام شروع کرئینگے اور انشااللہ تیراہ باغ میدان کے سارے بچوں کو حفاظتی ٹیکوں کی کورس مکمل کرئینگے

مزید :

کراچی صفحہ اول -