ترقی اور خوشحالی کا ایجنڈا ملک کو مسائل کے گرو اب سے نکال دے گا : نواز شریف

ترقی اور خوشحالی کا ایجنڈا ملک کو مسائل کے گرو اب سے نکال دے گا : نواز شریف

  

صوابی(محمد شعیب سے)امیر جمعیت علماء اسلام صوبہ خیبر پختونخوا مولانا گل نصیب خان نے واضح کر دیا ہے کہ پاکستان کے اندر پانچ صوبوں میں درحقیقت امن و امان ان صوبوں کی ذمہ داری ہے لیکن گذشتہ ساڑھے تین سال سے صوبہ خیبر پختونخوا میں پی ٹی آئی کی اتحادی حکومت امن و امان قائم کر نے میں بُری طرح ناکام ہو چکی ہے جب کہ صوبے میں الیکشن کے دوران تبدیلی کا جو نعرہ لگایا گیا تھا وہ بھی عملاً دم توڑ گیا ہے ان خیالات کااظہار انہوں نے اتوار کی سہ پہر موضع زروبی میں دارلعلوم صدیقیہ میں دو روزہ سالانہ روحانی و دینی اجتماع سے اختتامی خطاب اور بعد ازاں اباسین یونین آف جرنلسٹس ضلع صوابی کے پروگرام ''رابطہ '' میں اظہار خیال کر تے ہوئے کیا اس عظیم الشان اجتماع سے ضلعی امیر مولانا عطاء الحق درویش ، مرکزی نائب امیر مولانا فضل علی حقانی ، مفتی اعظم مولانا محمد محمد فرید کے صاحبزادے مولانا حسین احمد ،مولانا عبدالباری ، مولانا عبدالماجد ، مولانا ولی محمد ، مولانا مطیع اللہ ، مولانا آغا جان ، مولانا گوہر شاہ ، مولانا مستعمر شاہ اور دیگر علماء کرام نے بھی خطاب کیا۔ مولانا گل نصیب خان نے کہا کہ پی ٹی آئی حکومت اور چیر مین عمران خان کا صوبے میں اپنی کارکر دگی کی بجائے وفاق کے خلاف جلسے اور جلوس کا انعقاد انتہائی احمقانہ اور بے وقوفانہ سوچ ہے انہوں نے کہا کہ ستائیس اکتوبر کو اضاخیل پارک کے سامنے جمعیت طلبہ اسلام کے زیر اہتمام ہونے والا ''استحکام امن کانفرنس'' نوجوانوں کا صوبے کی تاریخ کا انوکھا تاریخی اجتماع ہو گا اور اس کنونشن میں صوبے کے طلبہ اور نوجوان یہ ثابت کر ینگے کہ نوجوان نسل علماء کے شانہ بشانہ دین اسلام کی سر بلندی اور نظام شریعت کے نفاذ کے لئے کھڑے ہیں مولانا گل نصیب خان نے کہا کہ عمران خان کا دو نومبر کو اسلام آباد بند کرنا فضول اور بے سود ہے اس قسم کے دھرنوں سے کرپشن کا خاتمہ ممکن نہیں عمران خان اپنی ناقص کارکر دگی اور ناکام پالیسیوں پر پردہ ڈالنے کے لئے اس قسم کا غیر ذمہ دارانہ کر دار ادا کر تے ہیں ان کی ناکامیوں کا یہ واضح ثبوت ہے کہ صوبہ خیبر پختونخوا میں ان کی ہی حکومت میں صحت ، تعلیم ، امن اور سماجی انصاف کے حوالے سے کسی قسم کی تبدیلی نہیں آئی مگر ستائیس اکتوبر کو ہونے والا تاریخی اجتماع نوجوان نسل کا رُخ تبدیل کریگاانہوں نے طالبان اور حکومت کے در میان مذاکرات کے بارے میں کہا کہ وسطی اور جنوبی ایشیاء کے مسائل کے حل کے لئے مذاکرات ضروری ہے لیکن عالمی قوتیں صلح کے لئے مذاکرات نہیں چاہتے جب کہ طاقتور امریکہ ہمیشہ مذاکرات کا ڈھونگ رچا رہا ہے مگر مذاکرات نہیں کر تے انہوں نے کہا کہ جہاں بھی عالمی قوتیں مسئلے کے حل کے لئے مذاکرات کرنا چاہے تو مذاکرات کی راہ میں کسی قسم کی رکاوٹ یا مشکل پیش نہیں آئے گی ۔ انہوں نے کہا کہ فاٹا کا کے پی کے میں انضمام کے حوالے سے فاٹا اصلاحاتی کمیٹی نے جو سفارشات مرتب کی ہے اس میں کے پی کے کو فاٹا میں ضم کرنا ، فاٹا کو الگ صوبہ بنانا اور ایف سی آر کا خاتمہ کر کے فاٹا بدستور مرکز کے ساتھ رہے گا شامل ہیں ۔ لہذا اس حوالے سے قبائلی عوام کی رائے لی جائے اور ان کے مشاورت سے فیصلہ کیا جائے انہوں نے کہا کہ سی پیک منصوبہ سارے پاکستان کے لئے مفید ہے اس منصوبے کے حوالے سے ہم خیبر پختونخوا کے لئے زیادہ سے زیادہ مراعات لینا چاہتے ہیں اگر اس منصوبے کو التواء میں ڈالنے اور خراب کرنے کی کوشش کی گئی تو اس کا نقصان سارے ملک کا ہو گا انہوں نے کہا کہ صوبہ خیبر پختونخوا میں پی ٹی آئی حکومت کی واضح ناکامی یہ بھی ہے کہ خیبر پختونخوا اسمبلی کی 33دنوں میں اب تک صرف گیارہ دن کی کارروائی ہو سکی ہے۔گیارہ دنوں کی کارروائی میں صرف چھ دن کا ایجنڈا آدھورہ رہ گیا ہے۔ اکثر اجلاسوں کا کورم پورا نہیں ہو تا ہے انہوں نے کہا کہ حکومتی اراکین کرپشن میں تمام رکاوٹ توڑ چکے ہیں تبادلے اور تقرریاں انصاف اور میرٹ کی بجائے پیسوں کے بل بوتے ہو رہے ہیں جب کہ صوبائی حکومت دوسروں پر کرپشن کا الزام لگا رہی ہے مگر خود حکومتی اراکین اس میں پوری طرح ملوث ہے صوبے کے عوام ان کے عزائم جان چکے ہیں اور آئندہ انتخابات میں بُری شکست سے دوچار کر دینگے#

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -