پرائمری سکول با رہ خیل کو ٹھا کے تین سو بیس طلباء اور طالبا ت تمام تر سہولیا ت سے یکسر محرو م

پرائمری سکول با رہ خیل کو ٹھا کے تین سو بیس طلباء اور طالبا ت تمام تر سہولیا ت ...

  

ٹوپی( نامہ نگار) تعلیمی ایمر جنسی کہا ں گئی! گور نمنٹ مسجد پرئمری سکول با رہ خیل کو ٹھا کے تین سو بیس طلباء اور طالبا ت تمام تر سہولیا ت سے یکسر محرو م سی سی ٹی وی کیمرے اور سیکو رٹی کا بند وبست نہ ہونے سے بچوں اور بچیوں کی زند گی غیر محفو ظ سکول میں سر دی سے بچنے کیلئے کمرے نہیں جبکہ گر می سے بچنے کیلئے پھنکے تو کیا بجلی کا کنکشن تک نہیں باتھ رومز کے نہ ہونے کے با عث طلبا ء اور طالبا ت کو حاجت کیلئے قریبی کھیتو ں کو جانا پڑتا ہے جو کہ خطرے سے خالی نہیں سکول میں ٹا ٹ نہ ہونے کی وجہ سے بچی بچیاں سیمنٹ کے فر ش پر بیٹھ کرتعلیم حا صل کرنے پر مجبو ر ہیں محلہ میں فو تگی ہوجائے تو مر دے کا جنا ز ہ بھی یہی پڑھائی جا تی ہے جوکہ بچیوں اور بچو ں کے پڑھائی میں خلل کا با عث ہو تا ہے ۔ حکو مت سے اصلا ح احو ال کا مطالبہ ، عوامی سماجی حلقے تفیصلا ت کے مطابق 1987ء میں قائم گو رنمنٹ مسجد پرائمر ی سکول با رہ خیل کو ٹھا جس میں اس وقت طلباء اور طالبا ت کی تعد اد تین سو بیس کے لگ بھگ ہے یہ سکول سپیکر صوبائی اسمبلی اسد قیصر کے حلقہ پی کے 35 میں واقع ہے جوکہ گونا گون مسائل کا شکا ر ہے۔ سکول میں نہ تو سیکورٹی کا کوئی انتظام ہے جس کی وجہ سے بچو ں اور بچیوں کی زند گی غیر محفو ظ ہے سر دی سے بچنے کیلئے نہ تو سکول میں کمرے ہیں اور نہ ہی گرمی سے بچنے کیلئے پنکھے مو جو د ہے ایک چھو ٹا سا کمر ہ جو کہ سٹا ف رو م اور ریکا رڈ رو مز دونو ں کے لئے استعمال کیا جا رہا ہے ۔ سر د ی میں بچے بچیاں ٹھنڈ سے اکثر اوقا ت نمونیا اور سینے کے بیما ری کا شکا ر ہو جا تے ہے۔ د ھو پ کے تپش سے بچنے کیلئے سایہ دار درخت ہے جبکہ پنکھو ں شنکھو ں کا کوئی انتظام نہیں با تھ رومز نہ ہونے کے باعث بچے بچیوں کو حا جت کیلئے قریبی کھیتو ں کو جانا پڑتا ہے جو کہ خطرے سے خالی نہیں ۔ محلہ کے کسی گھرمیں فو تگی ہو جائے تو اس کا جنا زہ بھی یہی پڑھ جا تاہے۔ جو کہ بچے اور بچیو ں کے پڑھائی میں خلل کا سبب بنتا ہے۔ گا ؤ ں کے عو امی سما جی حلقو ں نے سپیکر صوبائی اسمبلی اسد قیصر سے اپیل کر تے ہوئے کہا کہ بچے اور بچیو ں کے زند گی محفوظ بنانے کیلئے جلد سے جلد سکول کا بند وبست کرکے اس میں تمام سہولیت فر اہم کیا جائے۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -