بھتیجی کے قتل میں ملوث چچا کی سزائے موت منسوخ‘ بری کرنیکا حکم

بھتیجی کے قتل میں ملوث چچا کی سزائے موت منسوخ‘ بری کرنیکا حکم

  

ملتان ( نمائندہ خصوصی ) ہائیکورٹ ملتان کے ڈویڑن بینچ نے کمسن بھتیجی کے قتل میں ملوث چچاکو سزائے موت کا حکم منسوخ کرکے بری کرنے کا حکم دیاہے۔ فاضل عدالت میں ملزم محمد خالد نے اپیل دائر کی تھی کہ 9 اگست 2008ء کو اس کی 7 (بقیہ نمبر28صفحہ12پر )

سالہ بھتیجی یسریٰ طاہر گھر کے باہر کھیلتے ہوئے گم ہوگئی بعد ازاں اس کی لاش 11 اگست کو نہرلوئر باری دوآب سے ملی جبکہ اس کا بھائی محمد طاہر روزگارکے لئے امریکہ میں مقیم تھا جس کے آنے سے قبل بہنوئی نے مقدمہ درج کرایا کہ درخواست گذار نے ملزم خرم شہزاد کے ساتھ مل کر بھتیجی کو نہر میں پھینک کرقتل کردیا ہے جس پر ایڈیشنل سیشن جج ساہیوال نے اس کو سزائے موت اوردیگر سزاؤں کا حکم دیا ہے جبکہ اس کے خلاف قتل کرنے کی کوئی مضبوط وجہ بھی نہیں بتائی گئی ہے اورنہ ہی مقتولہ بچی کے جسم پر کسی قسم کے تشدد کانشان پایا گیا اورنہ ہی کوئی زہریلی چیز دیناثابت ہوا ہے جبکہ واقعہ کا کوئی عینی شاہدبھی موجود نہیں ہے اس لئے اس کو بری کرنے کا حکم دیا جائے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -