بچہ حوالگی کیس :عدالت نے فضہ بتول کوہر 2ماہ بعد بچہ والد سے ملوانے کا پابند کر دیا

بچہ حوالگی کیس :عدالت نے فضہ بتول کوہر 2ماہ بعد بچہ والد سے ملوانے کا پابند کر ...
بچہ حوالگی کیس :عدالت نے فضہ بتول کوہر 2ماہ بعد بچہ والد سے ملوانے کا پابند کر دیا

  

لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک )لاہور ہائیکورٹ نے سابق وزیر اعظم فضہ بتول کو ہر 2 ماہ بعد بچہ والد سے ملوانے کا پابند کر دیا ۔

ایکسپریس نیوز کے مطابق بچے سے ملاقات کے حوالے سے فضہ بتول کے سابق شوہر خرم خان کی درخواست کی سماعت لاہور ہائی کورٹ میں ہوئی ۔عدالت نے فضہ بتول کو ہر دو ماہ بعد ملوانے کا پابند کر دیا اور کیس کی مزید سماعت 5نومبر تک ملتوی کر دی ۔

بھارتی مسافر طیارے کی ہنگامی لینڈنگ ، تمام مسافر۔۔۔۔خبر پڑھنے کیلئے یہاں کلک کریں

ذرائع کا کہنا ہے کہ فضہ بتول نے عدالتی احکامات کے باوجود والد سے بچے کی ملاقات نہ کرانے پر عدالت سے معافی بھی مانگی اور عدالت کو یقین دہانی کرائی کہ آئندہ بچے کی والد سے ملاقات کرائی جائے گی جس پر عدالت نے سماعت 5نومبر تک ملتوی کر دی۔

یاد رہے کہ فضہ بتول کے سابق شوہر خرم خان نے بچے کی حوالگی کے حوالے سے فضہ بتول کے خلاف کیس دائر کر رکھا ہے اور گزشتہ سماعت پر گارڈین عدالت نے توہین عدالت پر فضہ بتول کے وارنٹ گرفتاری جا ری کیے تھے ۔ خرم خان نے اپنے وکیل میاں جاوید غنی کی وساطت سے فضہ بتول کے خلا ف توہین عدالت کی درخواست دائر کر رکھی ہے جس میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ عدالت نے فضہ بتول کو بچے سے ملاقات کرانے کا حکم دیا تھا مگر انہوں نے لاکھ کوششوں کے باوجود میرے ملاقات نہیں کرائی ۔

مزید :

لاہور -اہم خبریں -