پاکستان کے طلبہ کو نصاب میں جمہوریت کی خامیاں اور آمریت کی خوبیاں پڑھائی جا رہی ہیں: حامد میر

پاکستان کے طلبہ کو نصاب میں جمہوریت کی خامیاں اور آمریت کی خوبیاں پڑھائی جا ...
پاکستان کے طلبہ کو نصاب میں جمہوریت کی خامیاں اور آمریت کی خوبیاں پڑھائی جا رہی ہیں: حامد میر

  

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) سینئر اینکر پرسن حامد میر نے انکشاف کیا ہے کہ پاکستان کے چاروں صوبوں کے سکولوں اور کالجوں میں سوکس (شہریت) کی کتاب میں طلبہ کو جمہوریت کی خامیاں اور آمریت کی خوبیاں پڑھائی جارہی ہیں ۔

اپنے پروگرام کیپٹل ٹاک میں حامد میر نے بتایا کہ پنجاب ٹیکسٹ بک بورڈ کی جانب سے مارچ 2015 میں نہم کلاس کیلئے چھاپی جانے والی شہریت کی کتاب میں جمہوریت کو اکثر لوگوں کی آمریت قرار دیا گیا ہے جبکہ اسے چالاک لوگوں کی حکومت بھی کہا گیا ہے۔ کتاب میں کہا گیا ہے کہ جمہوریت والے بدعنوان ہوتے ہیں۔ دوسری جانب اسی کتاب میں آمریت کی اتنی خوبیاں بیان کی گئی ہیں کہ ہر طالبعلم کا ذہن منتشر کیا جارہا ہے۔ کتاب میں درج ہے کہ آمریت ایک ایسا نظام حکومت ہے جس میں لوگوں کو فوری انصاف میسر آتا ہے ۔ آمرانہ نظام حکومت میں لوگوں کی تعلیم و ترقی ، حکومت اور ادارے مضبوط ہوتے ہیں۔

علاوہ ازیں خیبر پختونخوا کی سوکس کی کتاب میں بادشاہت کی 4 خوبیاں اور 3 خامیاں بیان کی گئی ہیں جبکہ جمہوریت کی خوبیاں تو بیان کی گئی ہیں لیکن خامیاں نہیں ہیں۔ سندھ کی کتاب میں جمہوریت کی خامیاں اور خوبیاں برابر بیان کی گئی ہیں جبکہ آمریت کی خوبیاں سات اور خامیاں آٹھ بیان کی گئی ہیں۔

مزید :

اسلام آباد -