بھار ت میچ کی آخری گیند پر ہدف حاصل کرنے میں کامیاب، پاکستان کو شکست

بھار ت میچ کی آخری گیند پر ہدف حاصل کرنے میں کامیاب، پاکستان کو شکست

  

میلبورن (افضل افتخار)آئی سی سی ٹی 20 ورلڈ کپ کے سپر 12 مرحلے کے اہم میچ میں بھارت نے سنسنی خیز مقابلے کے بعد پاکستان کو شکست دیدی، پاکستان نے مقررہ بیس او ورز میں آٹھ وکٹوں کے نقصان پر 159رنز بنائے، ہدف کے تعاقب میں بھارت آخری اوور کے آخری گیند پر میچ جیتنے میں کامیاب ہوا، بھارتی ٹیم کے بیٹر ویرات کوہوہلی مین آف دی میچ قرار پائے۔تفصیلات کے مطابق میلبرن کرکٹ گراؤنڈ میں کھیلے جارہے میچ میں بھارت نے پاکستان کے خلاف ٹاس جیت کر فیلڈنگ کا فیصلہ کیا۔پاکستان کو اننگز کے آغاز پر ہی بڑا دھچکا لگا جب کپتان بابر اعظم بغیر کوئی رن بنائے آؤٹ ہوئے، کپتان بابر اعظم دوسرے اوور میں ارشدیپ سنگھ کی پہلی گیند پر ایل بی ڈبلیو ہوئے اور گولڈن ڈک پر پویلین لوٹ گئے۔پاکستان کو دوسرا نقصان وکٹ کیپر بلے باز محمد رضوان کی صورت میں اٹھانا پڑا، انہیں بھی ارشدیپ سنگھ نے آؤٹ کیا، وہ اننگز کے چوتھے اوور میں 4 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔پاکستان نے پاور پلے کے اختتام پر 2 وکٹوں کے نقصان پر 32 رنز بنائے۔پاکستان نے 8 اوورز کے اختتام پر 2 وکٹوں کے نقصان پر 44 رنز بنالیے، شان مسعود 25 اور افتخار احمد 12 رنز کے ساتھ بیٹنگ کر رہے تھے۔محتاط بیٹنگ کا سلسلہ جاری رکھتے ہوئے پاکستان نے 10 اوورز کے اختتام پر 62 رنز بنالیے،11واں اوور پاکستان کے لیے کچھ بہتر ثابت ہوا جہاں افتخار احمد نے 6 رنز کیلئے گیند کو باؤنڈری کے باہر پھینک دیا۔12ویں اوور میں افتخار احمد نے جارحانہ بلے بازی کا سلسلہ جاری رکھا اور 3 فلک شگاف چھکے لگائے بعد ازاں وہ 34 گیندوں پر 51 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔افتخار احمد کے آؤٹ ہونے کے بعد نائب کپتان شاداب خان بیٹنگ کرنے آئے اور 6 گیندوں کا سامنا کے بعد صرف 5 رنز بنا کر پویلین لوٹ گئے جبکہ ان کے بعد حیدر علی آئے جو 4 گیندوں پر صرف 2 رنز ہی بناسکے، دونوں بلے بازوں کو ہاردک پانڈیا نے آؤٹ کیا۔پاکستان کی جانب سے شان مسعود 37 رنز بنا کر کریز پر موجود تھے،ان کا ساتھ دینے کے لیے محمد نواز کریز پر آئے۔بعد ازاں محمد نواز بھی ہاردک پانڈیا کا نشانہ بنے، انہوں نے 6 گیندوں کا سامنا کرتے ہوئے 9 رنز بنائے۔محمد نواز کے آؤٹ ہونے کے بعد آصف علی بیٹنگ کرنے آئے اور صرف 3 رنز بناکر واپس لوٹ گئے، ان کو ارشدیپ سنگھ نے آؤٹ کیا۔ایک اینڈ سے شان مسعود نے محتاط بیٹنگ کا سلسلہ جاری رکھا اور 40 گیندوں پر اپنی نصف سنچری مکمل کی جبکہ اس دوران ان کا بھرپور ساتھ دیتے ہوئے شاہین شاہ آفریدی نے ارشدیپ سنگھ کو ایک چھکا اور ایک چوکا رسید کیا، وہ 8 گیندوں کا سامنا کرنے کے بعد 16 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔شاہین شاہ آفریدی کے آؤٹ ہونے پر حارث رؤف آئے اور پہلی بال پر ہی بھویشنو کمار کو زوردار کا چھکا رسید کیا۔شان مسعود 42 گیندوں پر 52 رنز کی شاندار اننگز کھیل کر ناؤٹ رہے،حارث رؤف نے 4 گیندوں پر 6 رنز بنائے اس طرح پاکستان نے مقررہ بیس اوورز میں 8 وکٹوں کے نقصان پر 159 رنز بنائے اور بھارت کو جیت کیلئے 160 رنز کا ہدف دیا۔محمد شامی نے ایک ایک وکٹ حاصل کی۔بھارتی اوپنر کے ایل راہول کو فاسٹ باؤلر نسیم شاہ نے کلین بولڈ کیا، وہ صرف 4 رنز بنا سکے۔نسیم شاہ کے بعد اگلے ہی اوور میں حارث رؤف کی گیند پر بھارتی کپتان روہت شرما بھی آؤٹ ہوگئے، وہ بھی 4 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے، افتخار احمد نے ان کا شاندار کیچ پکڑا۔بھارت کے تیسرے آؤٹ ہونے والے کھلاڑی سوریا کمار یاویو تھے جنہیں حارث رؤف نے پویلین کی راہ دکھائی، وہ 10 گیندوں پر 15 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔بھارت کے چوتھے آؤٹ ہونے والے کھلاڑی اکسر پٹیل تھے جو کپتان بابر اعظم کی شاندار تھرو پر رن آؤٹ ہوئے، وہ صرف 2 رنز بنا سکے۔بھارتی ٹیم نے 10 اوورز کے اختتام پر 4 وکٹوں کے نقصان پر 45 رنز بنائے تھے جبکہ مایہ ناز بیٹر ویرات کوہلی اور میچ میں زبردست باؤلنگ کا مظاہرہ کرنے والے راؤنڈر ہارڈ پانڈیا کریز پر موجود رہے اور سکور کو آہستہ آہستہ آگے بڑھاتے رہے تاہم 13 اوورز کے اختتام پر بھارت نے 4 کٹوں کے نقصان پر 90 رنز بنا لیے ا سموقع پر، ویرات کوہلی 34 اور ہارڈک پانڈیا 30 رنز پر بیٹنگ کر رہے تھے۔بھارتی ٹیم کے بیٹر ویرات کوہلی نے 53 گیندوں پر 82 جبکہ ہاردک پانڈیا 40 رنز بناکر نمایاں رہے تاہم دونوں کے درمیان 78 گیندوں پر 113 رنز کی عمدہ پارٹنر شپ لگی جس نے میچ کا نقشہ بدل دیا۔ آخر اوور میں جب بھارت کو جیت کیلئے 16 رنز درکار تھے تاہم امپائر کی طرف سے محمد نواز کی درست گیند کو نو بال قرار دینے  کی وجہ سے بھارت کو پھر میچ میں آنے کا موقع مل گیا اوربھارت کو آخری گیند پر ایک رنز درکار تھا تو ایسے میں روی ایشوین نے شارٹ لگا کر اپنی ٹیم کو فتح سے ہمکنار کروایا۔ پاکستان کی جانب سے محمد نواز اور حارث رؤف نے دو دو وکٹیں لیں جبکہ نسیم شاہ ایک وکٹ لینے میں کامیاب ہوئے، بھارت ایک کھلاڑی رن آؤٹ بھی ہوا، بھارت کی جانب سے ویرات کوہلی مین آف دی میچ قرار پائے۔

میچ

مزید :

صفحہ اول -