پنجاب حکومت کا وفاق سے توشہ خانہ کا 30سالہ ریکارڈ پبلک کرنے کا مطالبہ

پنجاب حکومت کا وفاق سے توشہ خانہ کا 30سالہ ریکارڈ پبلک کرنے کا مطالبہ

  

      لاہور(این این آئی)پنجاب حکومت نے وفاقی حکومت سے توشہ خانہ کا 30سالہ ریکارڈ پبلک کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ امپورٹڈ حکومت اور چیف الیکشن کمشنر قوم کو گمراہ کرنا بند کریں، مسلم لیگ (ن) اور پیپلزپارٹی کی قیادت نے اپنے ادوار میں توشہ خانہ کے تحائف کوڑیوں کے بھاؤ خریدے۔ ترجمان وزیر اعلی و حکومت پنجاب مسرت جمشید چیمہ نے سینیٹر اعجاز چوہدری کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ وفاقی حکومت توشہ خانہ کا 30 سالہ ریکارڈ  پبلک کرے،توشہ خانہ سے تحائف لینے والے ہر شخص کا نام عوام کو بتایا جائے۔ انہوں نے کہا کہ نواز شریف 1997 میں ترکمانستان حکومت کا قالین 50 روپے میں گھر لے گئے، لاکھوں روپے مالیت کی سعودی رائفل 14 ہزار، قطر کا بریف کیس مفرور شریف 875 میں لے کر گئے۔ انہوں نے کہا کہ قانون کے مطابق گاڑیاں توشہ خانہ سے گھر لے کر نہیں جائی جا سکتی، میاں صاحب 45لاکھ کی مرسڈیز 6 لاکھ میں گھر لے گئے، ابو ظہبی سے 3 قیمتی گھڑیاں مریم اور ان کے خاندان کے دیگر افراد لے اڑے،10 لاکھ کی گھڑی مریم نے 45ہزار ادا کرکے حاصل کی۔ مسرت چیمہ نے کہا کہ مریم کے دادا کے والدِ محترم عبداللہ ہاراں والا امرتسر میں ریہڑی لگاتے تھے، مریم نواز اپنے خاندان کی امارت کے جھوٹے قصے سناتی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ یوسف رضا گیلانی کی اہلیہ نے 30لاکھ کا جیولری  سیٹ 3 لاکھ  دے کر لیا،آصف زرداری صاحب 12 کروڑ کی گاڑی 1کروڑ 60 لاکھ میں گھر لے گئے،امپورٹڈ حکومت اور چیف الیکشن کمشنر قوم کو گمراہ کرنا بند کریں۔ انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف نے توشہ خانہ تحائف کی قیمت 20 سے بڑھا کر50فیصد مقرر کی،قیمت ادا کرنے پر تحفہ ملکیت بن جاتا ہے، عمران خان ملک کی حقیقت ہیں، یہ سب مل کر ان کو سیاسی میدان میں نہیں ہرا سکتے، 17 جولائی اور 16اکتوبر کے انتخابات میں قوم نے عمران خان کے حق میں اپنا فیصلہ سنایا۔ 

پنجاب حکومت

مزید :

صفحہ اول -