حکومت صوبے میں قیام امن کیلئے اقدامات کر ے،آفتاب شیر پاؤ

حکومت صوبے میں قیام امن کیلئے اقدامات کر ے،آفتاب شیر پاؤ

  

      پشاور(سٹی رپورٹر) قومی وطن پارٹی کے چیئرمین آفتاب احمد خان شیرپاؤ نے خیبرپختونخوا باالخصوص سوات میں امن و امان کی بگڑتی ہوئی صورتحال پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے حکومت پر زور دیا کہ وہ قیام امن کیلئے فوری اقدامات کرے بصورت دیگر حالات قابو سے باہر ہو سکتے ہیں۔ان خیالات کا اظہار انھوں نے ایک شمولیتی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پرتحصیل مٹہ سوات کے معروف سیاسی شخصیات ممتاز خان،عثمان علی سینا اور خاتون قانون دان شمیم آزادایڈوکیٹ آف مینگورہ سمیت ابرار علی،راحت علی،منظر حبیب،عزیر علی،محمد اویس خان،غلام مصطفٰی،سید عبدالستار شاہ،ابراہیم محمد،مدثر کبیر،محمد ذیشان،عبید سینا اورعزیر پنڈی نے اپنے ساتھیوں اور خاندانوں سمیت قومی وطن پارٹی میں شمولیت کا اعلان کیا۔آفتاب شیرپاؤ نے ضلع سوات کے لوگوں کو عسکریت پسندی کی حالیہ لہر کے خلاف احتجاجی مظاہرے کرنے پر سراہا۔انھوں نے کہا کہ عوام امن کی بحالی چاہتے ہیں کیونکہ امن ترقی کی ضامن ہے۔ انھوں نے کہا کہ ماضی میں مالاکنڈ ڈویژن کے لوگوں کو عسکریت پسندی اور بعد میں فوجی آپریشن کی وجہ سے نقل مکانی کا سامنا کرنا پڑا،انھوں نے کہا کہ لوگ مزید ایسی صورت حال کا سامنا کرنے کے متحمل نہیں ہو سکتے جس کی وجہ سے وہ احتجاج کرنے پر مجبورگئے ہیں۔آفتاب شیرپاؤ نے کہا کہ امن و امان قائم رکھنے کی ذمہ داری صوبائی حکومت کی ہے لہٰذا اس ضمن میں وفاقی حکومت کو مورد الزام ٹہرانا مناسب نہیں۔انھوں نے وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ اگر صوبائی حکومت سیکورٹی کی صورتحال پر قابو نہیں پاسکتی ہے تو وہ وفاق سے مدد طلب کرسکتی ہے۔انھوں نے مزید کہا کہ صوبائی حکومت لاقانونیت کو روکنے میں اپنا کردار ادا کرنے میں بڑی حد تک ناکام رہی ہے جس کی وجہ سے لوگ احتجاج کرنے پر مجبور ہوئے۔توشہ خانہ ریفرنس میں الیکشن کمیشن آف پاکستان کی جانب سے پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران نیازی کو نااہل قرار دینے کے فیصلے کا خیرمقدم کرتے ہوئے آفتاب شیرپاؤنے کہا کہ سابق وزیراعظم کو اگر اس فیصلے پر کوئی تحفظات ہیں تووہ انتشار پھیلانے کی بجائے عدالت سے رجوع کرے۔انھوں نے کہا کہ فنانشل ایکشن ٹاسک فورس کی جانب سے پاکستان کو گرے لسٹ سے نکالنا ایک مثبت پیش رفت ہے اور امید ہے کہ اس سے ملکی معیشت پر اچھے اثرات مرتب ہوں گے۔مہنگائی پر قابو پانے میں ناکامی پر حکومت کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے انھوں نے کہا کہ عوام کوکمر توڑ مہنگائی کا سامنا ہے جس نے ان کی زندگی اجیرن کر دی ہے لہٰذامہنگائی پر قابو پانے کیلئے موثر اقدامات کرنے ہوں گے کیونکہ یہ مسئلہ حکمران اتحاد کیلئے ایک امتحان ہے۔انھوں نے ملک میں گیس اور بجلی کی طویل لوڈشیڈنگ پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے حکومت سے عوام کو ریلیف فراہم کرنے کے لیے اقدامات اٹھانے کا مطالبہ کیا۔اس موقع پر قومی وطن پارٹی کے صوبائی چیئرمین سکندر حیات خان شیرپاؤ،صوبائی جائنٹ سیکرٹری سعید خان بام خیل،کیو ڈبلیو پی ضلع سوات کے چیئرمین شیربہادرزادہ خان اور جنرل سیکرٹری رضااللہ ایڈوکیٹ کے علاوہ دیگر عہدیدار اور کارکن بھی موجود تھے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -