صحت کارڈ میں مبینہ بے قاعد گیاں، پی ڈی ایف کا تشویش

صحت کارڈ میں مبینہ بے قاعد گیاں، پی ڈی ایف کا تشویش

  

       پشاور(سٹی رپورٹر) پیپلز ڈاکٹرز فورم خیبرپختونخوا نے صحت کارڈ میں ہونے والی بے قاعدگیوں ہر تشویش کا اظہار کیا ہے اور عدلیہ سے مطالبہ کیا ہے کہ اتنی بڑی کرپشن کی انکوائری کراکر عوام کی جان ومال سے کھلواڑ کرنے والوں کو کیفرکردار تک پہنچایاجائے۔ ان خیالات کا اظہار پیپلز ڈاکٹرز فورم کے صوبائی صدرپروفیسر ڈاکٹر نثار نے اپنے زیرصدارت پیپلز سیکرٹریٹ پشاور میں اجلاس میں کیا جس میں جنرل سیکرٹری ڈاکٹر داؤد اور ڈاکٹر محمد یاسر‘ ڈاکٹر زمان خٹک‘ ڈاکٹر نیک نواز‘ ڈاکٹر عبد المنان‘ ڈاکٹر صفدر زمان‘ ڈاکٹر ظفر اللہ‘ ڈاکٹر وقار احمد خان‘ ڈاکٹر آصف اقبال‘ ڈاکٹر فضل واحد‘ ڈاکٹر حامد بنوری‘ ڈاکٹر نہار‘ ڈاکٹر داؤد اقبال‘ ڈاکٹر ایاز‘ ڈاکٹر ندیم‘ ڈاکٹر حامد امان‘ ڈاکٹر طارق جدون‘ ڈاکٹر شکیل نے شرکت کی۔ اس موقع پر پروفیسر ڈاکٹر نثار نے کہا کہ عوام جاننا چاہتی ہے کہ انشورنس کیلئے پیسے کہاں سے آرہے ہیں اور یہ کس حساب سے خرچ کیے جارہے ہیں۔ اجلاس میں خیبرپختونخوا میں سرکاری ہسپتالوں کی نجکاری کی مذمت کی گئی اور کہاگیاکہ پی ٹی آئی حکومت اپنی نااہلی چھپانے کے لیے ہسپتالوں کی نجکاری کررہی ہے۔ انھوں نے وفاقی حکومت کی جانب سے پی ایم ڈی سی بل کی منظوری کو سراہا اور وفاقی وزیر صحت قادرپٹیل کو خراج تحسین پیش کیا اور اجلاس میں پیپلز ڈاکٹر فورم کے تنظیمی امور پر خصوصی گفتگو پروفیسر ڈاکٹر نثار کہاکہ اس سے این ایل ای کا خاتمہ ہوجائے گا۔ شرکاء نے مزید کہا کہ صوبائی محکمہ صحت کی انتقامی کارروائیاں کسی صورت برداشت نہیں کی جائیں گی اور اس سلسلے میں جی ایچ اے کے شانہ بشانہ کسی قربانی سے دریغ نہیں کیا جائے گا۔ شرکاء نے مادر جمہوریت محترمہ نصرت بھٹو کی گیارہویں برسی پر انھیں خراج عقیدت بھی پیش کیا اور ان کی خدمات کو سراہا گیا

مزید :

پشاورصفحہ آخر -