بجلی کے پیداواری اخراجات میں سالانہ بنیادوں پر نمایاں اضافہ ریکارڈ

بجلی کے پیداواری اخراجات میں سالانہ بنیادوں پر نمایاں اضافہ ریکارڈ

  

       ملتان(نیٹ نیوز)مختلف ذرائع سے بجلی کے پیداواری اخراجات میں مالی سال کی پہلی سہ ماہی میں سالانہ بنیادوں پرنمایاں اضافہ ریکارڈ کیا گیانیپرا اورٹاپ لائن سکیورٹیز کے مطابق مالی سال کی پہلی سہ ماہی میں آرایل این جی سے بجلی پیدا کرنے کے اخراجات (بقیہ نمبر41صفحہ6پر)

میں سالانہ بنیادوں پر 98 فیصدکی نمو ریکارڈ کی گئی جاری مالی سال میں آرایل این جی سے بجلی پیداکرنے کے اخراجات کی شرح 26.5روپے فی یونٹ ریکارڈکی گئی جوگزشتہ مالی سال کی اسی مدت میں 13.4روپے فی یونٹ تھی،ماہ ستمبرمیں شرح 26 روپے جو گزشتہ ستمبرمیں 14.9روپے فی یونٹ تھی۔گیس سے بجلی پیداکرنے کے اخراجات میں 25 فیصدکااضافہ ہوا گیس سے بجلی پیداکرنے کی شرح10.4روپے یونٹ جوگزشتہ اسی مدت میں 8.3 روپے فی یونٹ تھی پہلی سہ ماہی کے دوران کوئلہ سے بجلی پیداکرنے کے اخراجات میں سالانہ بنیادوں پر115 فیصدکی نمو ریکارڈکی گئی ہے، کوئلہ سے بجلی پیداکرنے کے اخراجات 19.7روپے جوگزشتہ مالی سال کی اسی مدت میں 9.2 روپے یونٹ تھی ستمبرمیں 18روپے جو گزشتہ ستمبرمیں 10.1 روپے یونٹ تھی اعدادوشمارکے مطابق فرنس آئل سے بجلی پیداکرنے کے اخراجات میں پہلی سہ ماہی کے دوران سالانہ بنیادوں پر96فیصدکی نموریکارڈکی گئی ہے، فرنس آئل سے بجلی پیداکرنے کی لاگت 35.3 روپے فی یونٹ ریکارڈکی گئی جوگزشتہ مالی سال کی اسی مدت میں 18 روپے فی یونٹ تھی۔ماہ ستمبر میں لاگت 35.3 روپے ریکارڈکی گئی جوگزشتہ ستمبرمیں 18.3روپے فی یونٹ تھی۔ہائی اسپیڈڈیزل سے بجلی پیداکرنے کی لاگت میں پہلی سہ ماہی کے دوران سالانہ بنیادوں پر41 فیصدکی نموریکارڈکی گئی پہلی سہ ماہی میں ہائی سپیڈ ڈیزل سے بجلی پیداکرنے کی لاگت 27.9 روپے فی یونٹ ریکارڈکی گئی۔

بجلی پیداوار

مزید :

ملتان صفحہ آخر -