صوبائی حکومت صوبے کے تمام اضلاع کو موٹر ویز کے ذریعے منسلک کرنے پر کام کر رہی ہے: محمود خان 

صوبائی حکومت صوبے کے تمام اضلاع کو موٹر ویز کے ذریعے منسلک کرنے پر کام کر رہی ...

  

پشاور(سٹاف رپورٹر)خیبرپختونخوا حکومت کے ایک اور فلیگ شپ منصوبے دیر موٹروے کی تعمیر کیلئے زمین کی خریداری کا عمل شروع کر دیا گیا ہے اور درکار زمین کی بروقت خریداری کو یقینی بنانے کیلئے کمیٹی تشکیل دے دی گئی ہے جو خریداری کے عمل کی نگرانی کے ساتھ ساتھ حائل رکاوٹوں کو بھی دور کرے گی۔ دیر موٹروے کی تعمیر کیلئے سروے کا عمل مکمل کرلیا گیا ہے جبکہ دیگر پہلوؤں پر بھی پیشرفت جاری ہے۔ یہ بات گزشتہ روز وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا محمود خان کی زیر صدارت محکمہ مواصلات و تعمیرات کے ایک جائزہ اجلاس میں بتائی گئی ہے۔اجلاس کو دیر موٹروے، پشاور ڈی آئی خان موٹروے، سوات موٹروے فیز ٹو،مدین بائی پاس، بحرین بائی پاس اور دیگر منصوبو ں پر اب تک کی پیشرفت بارے تفصیلی بریفینگ دی گئی۔ اجلاس کو آگاہ کیا گیا کہ ابتدائی الائنمنٹ کے مطابق دیر موٹروے کی کل لمبائی 30 کلومیٹر ہے جو چار لائنز پر مشتمل ہو گی جبکہ موٹروے پر دو ٹنلزبھی تعمیر کی جائیں گی۔پشاور ڈی آئی خان موٹروے کے حوالے سے بتایا گیا کہ یہ موٹروے 365 کلومیٹر طویل ہو گی جو چھ لینز پر مشتمل ہو گی جبکہ 19 انٹرچینجز اور دو ٹنلز بھی تعمیر کی جائیں گی۔اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے وزیراعلیٰ نے کہاکہ صوبائی حکومت صوبے کے تمام اضلاع کو موٹرویز کے ذریعے منسلک کرنے پر کام کر رہی ہے جس کا مقصد عوام کو آرام دہ سفر کی سہولت کی فراہمی کے ساتھ ساتھ صوبے میں تجارتی سرگرمیوں کو بھی فروغ دینا ہے۔اْنہوں نے متعلقہ حکام کو ہدایت کی ہے کہ صوبائی حکومت کے تمام منصوبوں پر ٹائم لائنز کے مطابق عملی پیشرفت کو یقینی بنایا جائے، عوامی فلاح و بہبود کے ان منصوبوں میں کسی قسم کی تاخیر برداشت نہیں کی جائے گی۔ اْنہوں نے واضح کیاکہ صرف اْنہی منصوبوں کا افتتاح یا سنگ بنیاد رکھا جائے گا جو گراؤنڈ پر مکمل ہوں یا مقررہ ٹائم لائنز کے اندر مکمل کی جا سکیں۔ وزیراعلیٰ کے پرنسپل سیکرٹری امجد علی خان، سیکرٹری پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ شاہ محمود، سیکرٹری مواصلات اورپختونخوا ہائی ویز اتھارٹی کے اعلیٰ حکام نے بھی اجلاس میں شرکت کی۔

مزید :

صفحہ اول -