کھاردار جنرل ہسپتال میں پانچ جڑواں بچوں کی 16ویں سالگرہ کی تقریب

  کھاردار جنرل ہسپتال میں پانچ جڑواں بچوں کی 16ویں سالگرہ کی تقریب

  

کراچی(اسٹاف رپورٹر)کھارادر جنرل ہسپتال کراچی میں 16سال قبل پیدا ہونے والے 5 جڑواں بچوں کی 16ویں سالگرہ کی تقریب کا اہتمام کیا گیا۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ہسپتال کے چیئرمین اور معروف ماہر امراض اطفال پروفیسر عبدالغفار بلونے کہا کہ معیاری طبی خدمات سے زندگیاں بچائی جا سکتی ہے۔پروین عباس نے 2006 میں 5جڑواں بچوں کو جنم دیا جو کہ انتہائی کم آمدنی والے طبقے سے تعلق رکھتی ہے۔کھارادر جنرل ہسپتال نے اپنی اخلاقی ذمہ داری سمجھتے ہوئے ان بچوں کی طبی، غذائی، تعلیمی و دیگر ضروریات میں معاونت کی۔ آج بھی وقت سے پہلے اور کم وزن والے نومولود بچے ہمارے ملک میں معیاری طبی سہولیات کے منتظر ہیں۔ماؤں کی زچگی کے دوران صحت میں بہتری لا کر بہت سی زندگیاں بچائی جا سکتی ہیں۔ ماہر امراض نسواں ڈاکٹر ہؤوی برڈی نے کہا کہ پانچ جڑواں بچوں کی ولادت کسی بھی معاشرے میں ایک بڑی اور منفرد خبر ہوتی ہے پر ان بچوں کو بچانے کے لئے اٹھائے گئے اقدامات ہی اہم ثابت ہوتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ہسپتال کے صدر محمد بشیر جا ن محمد اور انتظامیہ کے بھرپور تعاون سے اس فیملی نے خوشی کا یہ مرحلہ بخوبی طے کیا۔ ماہر امراض اطفال ڈاکٹر سید شکیل رضوی نے کہا کہ ان کم وزن والے بچوں کے علاج میں درپیش چیلنجز ایک انوکھا اور یادگار تجربہ تھا۔والدین ذرائع ابلاغ اور معاشرے کی نظریں ہم پر مرکوز تھیں۔ 14دن بعد جب بچے والدین کے حوالے کئے گئے تو وہ منظر دیدنی تھا۔ اب یہ بچے ہسپتال کہ مسلسل کفالت سے 16سال کے ہو گئے ہیں  جو کہ انتہائی خوش کن بات ہے۔ ہسپتال کے چیف ایگزیکٹیو آفیسر ڈکٹر خالد اقبال نے ہسپتال کے صدر محمد بشیر جان محمد اور انتظامیہ کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ 16سال کا طویل سفر انسانی قدروں کی بحالی اور انسانی زندگی کی قدر و قیمت کے احساس کا سفر ہے۔ کھارادر جنرل ہسپتال سینکڑوں زندگیوں میں بہتری لانے کے لئے کوشاں ہے۔ بعد ازاں پروین عباس اور پانچ جڑواں بچوں نے کیک کاٹا اور بچوں کو کمپیوٹرو انعامات سے بھی نوازاگیا۔ 

مزید :

صفحہ آخر -