جواں سال مسلمان لڑکے نے اپنی خاتون ٹیچر کو ایسی بات کہہ دی کہ پورے یورپ کو آگ لگ گئی

جواں سال مسلمان لڑکے نے اپنی خاتون ٹیچر کو ایسی بات کہہ دی کہ پورے یورپ کو آگ ...
جواں سال مسلمان لڑکے نے اپنی خاتون ٹیچر کو ایسی بات کہہ دی کہ پورے یورپ کو آگ لگ گئی

  


جنیوا (نیوز ڈیسک)اہل مغرب انسان تو کیا جانوروں کے حقوق کا بھی بے حد خیال رکھتے ہیں لیکن جب بات ہو مسلمانوں کی تو شخصی آزادی اور انسانی حقوق کی ساری بحث لپیٹ دی جاتی ہے اور قانون و اخلاقیات کا بدترین مذاق اڑانے میں بھی کوئی ہچکچاہٹ محسوس نہیں کی جاتی۔ کچھ ایسا ہی شرمناک معاملہ یورپی ملک سوئٹزرلینڈ میں دیکھنے میں آیا ہے جہاں رواں سال کے آغاز میں دو مسلمان طلبا کے خلاف محض اس بنا پر تادیبی کارروائی کا آغاز کردیا گیا کہ وہ اپنی خاتون ٹیچرز سے ہاتھ نہیں ملانا چاہتے تھے۔ باصل کاﺅنٹی کے علاقے تھرویل سے تعلق رکھنے والے ان بھائیوں کو سوئٹزرلینڈ کی روایات کے مجرم قرار دیا گیا اور بڑے بھائی کو جون کے مہینے میں سکول سے نکال دیا گیا۔ چھوٹے بھائی 15 سالہ عامر صالحانی کی جانب سے سکول انتظامیہ کے فیصلے کے خلاف اپیل دائر کی گئی تھی، اور اب بالآخر اس کی اپیل بھی رد کردی گئی ہے اور اسے حکم دیا گیا ہے کہ وہ ناصرف اپنی ٹیچرز سے معافی مانگے بلکہ ان کے ساتھ ہاتھ ملانا بھی اس پر لازم قرار دیا گیا ہے۔ اس حکم کی تعمیل نہ کرنے کی صورت میں اسے بھی سکول کی تعلیم سے محروم ہونا پڑے گا اور بھاری جرمانے کا سامنا بھی کرنا پڑے گا۔

پاکستانیوں کی وہ 9 حیرت انگیز ایجادات،جن کے بارے میں جان کر آپ کا سر فخر سے بلند ہو جائے گا

میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق عامر صالحانی اور اس کے بڑے بھائی کا موقف تھا کہ وہ اپنی مذہبی روایات کی پابندی کرتے ہوئے خواتین ٹیچرز کے ساتھ ہاتھ نہیں ملاسکتے۔ سکول کی جانب سے ابتدائی طور پر ان کے موقف کو تسلیم کیا گیا لیکن جب اسلام مخالف شدت پسندوں نے اس بات پر واویلا شروع کیا تو سکول انتظامیہ کا رویہ بھی بدل گیا۔ دونوں لڑکوں کے خلاف انضباتی کارروائی کا آغاز شروع کردیا گیا جس کے نتیجے میں بڑے بھائی کو سکول سے فارغ اور چھوٹے بھائی کو وارننگ جاری کی گئی تھی۔ سکول انتظامیہ کی جانب سے عامر صالحانی کی اپیل رد کئے جانے پر اسلام مخالف شدت پسندوں نے خوب خوشی کا اظہار کیا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ اس فیصلے کے بعد ایک مثال قائل ہوگئی ہے اور اب کسی مسلمان طالبعلم کو خواتین ٹیچرز کے ساتھ ہاتھ ملانے سے انکار کی جرا¿ت نہیں ہوسکے گی۔

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...