امریکہ میں بچوں کو سکول کے بعد شیطان کی”پوجا“ کرنے پر مجبور کیا جانے لگا، والدین میں تشویش کی لہر

امریکہ میں بچوں کو سکول کے بعد شیطان کی”پوجا“ کرنے پر مجبور کیا جانے لگا، ...
امریکہ میں بچوں کو سکول کے بعد شیطان کی”پوجا“ کرنے پر مجبور کیا جانے لگا، والدین میں تشویش کی لہر

  


سیاٹل (نیوز ڈیسک) بچوں کی تعلیم وتربیت کے لئے طرح طرح کی ہم نصابی و غیر نصابی سرگرمیوں کا اہتمام کیا جاتا ہے مگر امریکہ کے سکولوں کو پہلی بار یہ حیران کن درخواست موصول ہوگئی ہے کہ دیگر تربیتی کلبوں کی طرح بچوں کو ایک شیطانی کلب کا رکن بننے کی اجازت بھی دی جائے۔

سکاگٹ ویلی ہیرلڈ کی رپورٹ کے مطابق یہ درخواست ادارے ”سیاٹل شیطانی مندر“ کی جانب سے شعبہ تعلیم کو بھیجی گئی ہے۔ شیطانی مندر کے وکیل ڈنکن فوبز کی جانب سے محکمہ تعلیم کی انتظامیہ کو بھیجی گئی درخواست میں کہا گیا ہے کہ بعداز سکول شیطانی کلب میں طلبا و طالبات کو منطق، خود انحصاری اور استدلال کی تربیت دی جاتی ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ شیطانی مندر کے علم میں یہ بات آئی تھی کہ مختلف سکولوں میں بائبل کلب قائم کئے گئے ہیں جن کے ذریعے بچوں کو عیسائیت کی تعلیم دی جاتی ہے اور ان کے ذہنوں میں مذہبی رجحانات پیدا کئے جاتے ہیں۔ ڈنکن نے بتایا کہ بائبل کلب کے مقابلے میں شیطانی مندر نے اپنا کلب قائم کیا ہے تاکہ اس کے ذریعے بچوں کو مذہب کی بجائے اپنی عقل اور استدلال استعمال کرنے کی تربیت دی جاسکے۔

عدالت نے طالب علموں کے حق میں ایسا فیصلہ دے دیا کہ جان کر آپ بھی داد دیں گے

ایک جانب امریکی والدین اس بات پر حیران و پریشان ہیں کہ ان کے بچوں کو شیطانی کلب کا رکن بننے کو کہا جا رہا ہے تو دوسری جانب ڈنکن فوبز نے محکمہ تعلیم کو خبردار کیا ہے کہ اگر وہ سٹوڈنٹس کو شیطانی کلب کی رکنیت حاصل کرنے کی اجازت نہیں دیں گے تو ان کے خلاف قانونی کارروائی کی جائے گی، جو انہیں بہت مہنگی پڑے گی اور اس مقدمے کا فیصلہ ان کے حق میں نہیں آئے گا۔

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...